امریکہ اور آل سعود کے اختلافات ختم نہیں ہوئے:صیہونی انٹیلی جنس

صہیونی حکومت کے انٹیلی جنس حلقوں کے قریبی ایک صہیونی میڈیا نے امریکی صدر کے دورہ سعودی عرب کی منسوخی کی اصل وجہ بتائی ہے۔

ولایت پورٹل:دیبکا نیوز ویب سائٹ  کے مطابق ریاض کو تیل کی پیداوار بڑھانے پر آمادہ کرنے کے لیے امریکی سعودی مذاکرات کی ناکامی جو بائیڈن کے سعودی عرب کے دورے کی منسوخی کی بڑی وجہ ہے، اسرائیلی انٹیلی جنس حلقوں کے قریب ہونے کا دعویٰ کرنے والے میڈیا نے باخبر ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ جیسا کہ واشنگٹن کہہ رہا ہے کہ تیل کی پیداوار میں سعودی عرب کا حصہ بڑھانے کے لیے امریکی-سعودی وفد کی بات چیت کی ناکامی کی وجہ سے بائیڈن کا خطے کا دورہ ملتوی ہوا۔

ان ذرائع کے مطابق کہ روس اور یوکرین جنگ کی وجہ سے عالمی تیل کی قیمتوں میں اضافے کو روکنے کے لیے واشنگٹن کو سعودی پیداوار میں اضافہ کرنے کی ضرورت ہے جو کہ اب 120 ڈالر تک پہنچ چکی ہے، تاہم سکیورٹی سروسز سے حاصل ہونے والی معلومات سے پتہ چلتا ہے کہ سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان تیل کی پیداوار اور قیمتوں پر روسی صدر ولادیمیر پوتن کے ساتھ ہم آہنگی کو ترجیح دیتے ہیں۔

واضح رہے کہ واشنگٹن اور ریاض کے درمیان دراڑ نے امریکہ کو مجبور کیا ہے کہ وہ اس موسم گرما میں تیل کے اپنے تزویراتی ذخائر میں دوبارہ داخل ہو اور قیمتوں کو مزید بڑھنے سے روکنے کی کوشش کرے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین