روضوں کی مسماری اور میوزیم کی تعمیر؛ آل سعود کے کارنامے

سعودی عربین میوزیم کمیشن کے منیجنگ ڈائریکٹر نے کہا کہ کمیشن آئندہ دو سالوں میں دمام، ابہا، حائل اور قصیم صوبوں کے شہروں میں اسلامی ثقافت اور فن پر توجہ مرکوز کرنے والے میوزیم قائم کرے گا۔

ولایت پورٹل:سعودی گزٹ کی رپورٹ کے مطابق سعودی میوزیم کمیشن کے سی ای او سٹیفانو کاربونی نے یہ اعلان کنگ عبدالعزیز ورلڈ کلچرل سینٹر میں اسلامی آرٹ پر تین روزہ بین الاقوامی کانفرنس میں کیا، انہوں نے مزید کہا کہ کمیشن 2030 تک نجران اور عر عر میں دیگر میوزیم کھولے گااور لانچ کرے گا۔
 کاربونی نے مزید کہاکہ ان عجائب گھروں کا مرکز اسلامی ثقافت اور فن پارے ہوں گے، اسلامی فن پر تین روزہ بین الاقوامی کانفرنس بعنوان "مسجد: مقصد، شکل اور فنکشن میں جدت" کا انعقاد کیا گیا جس کا مقصد مساجد کی تاریخی ترقی، معانی اور افعال پر توجہ دینا ہے۔
 اسلامی فن اور فن تعمیر کے متعدد ماہرین نے کانفرنس میں تعمیراتی عناصر، تاریخی مساجد اور اسلامی فنون جیسے مسائل پر اظہار خیال کیا، یادرہے کہ فروری 2020 میں کاربونی کو سعودی وزیر ثقافت، بدر بن عبداللہ بن فرحان آل سعود نے، سعودی میوزیم کمیشن کے نئے سی ای او کے طور پر مقرر کیا، جسے میوزیم اور تاریخ سے متعلقہ شعبوں میں ماہرین کی ترقی اور تربیت کا کام سونپا گیا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین