یمن میں ایک بڑی تباہی کی الٹی گنتی شروع ہوچکی ہے؛اقوام متحدہ کا انتباہ

اقوام متحدہ کے سینئر عہدیداروں نے ایک بار پھر متنبہ کیا ہے کہ جنگ زدہ ملک یمن میں لاکھوں مرد ، خواتین اور بچے بڑے قحط کے خطرہ میں ہیں۔

ولایت پورٹل:روئٹرز نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اقوام متحدہ کے فوڈ چیف ڈیوڈ بیسلی نے سلامتی کونسل کو بتایا کہ یمنی عوام  اس وقت تباہی کا شکار ہو رہے ہیں،ہم اس صورتحال کو پہلے ہی دیکھ چکے ہیں، ہم نے خطرے کی گھنٹی بجا دی ہے۔
واضح رہے کہ اقوام متحدہ یمن کی موجودہ صورتحال کو دنیا کا سب سے بڑا انسانی بحران سمجھتی ہےجس میں 80٪ عوام کو امداد کی فوری ضرورت ہے۔
بیسلے نے سلامتی کونسل کے 15 ممبروں کو بتایا کہ مجھے اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ اگلے چند مہینوں میں یمن تباہ کن خشک سالی میں ڈوب جائے گا۔
قابل ذکر ہے کہ سعودی عرب کے زیرقیادت فوجی اتحاد نے 2015 میں مستعفی یمنی حکومت کی حمایت کے بہانے یمن پر حملہ کیا تھا، تب سے ، اقوام متحدہ کے عہدیداروں متعدد بار دعوی کیا ہے کہ انھوں نے جنگ زدہ ملک میں تباہ کن جنگ کے خاتمے کے لئے امن مذاکرات کے احیاء کی بہت کوششیں کی ہیں لیکن آل سعودکی جارحیت ہے جو رکنے کا نام ہی نہی لے رہی ہے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین