Code : 4352 5 Hit

مزید صیہونی بستیوں کی تعمیر صیہونیوں کو گلے لگانے والوں کے منھ پر زور دار طمانچہ

فلسطینی اتھارٹی کے محکمہ خارجہ نے اعلان کیا ہے کہ صیہونی حکومت نے آباد کاروں کے لئے 980 رہائشی یونٹ بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

ولایت پورٹل:العہد نیوز ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق فلسطینی اتھارٹی کی وزارت خارجہ نے آج (پیر کو) صیہونی آباد کاروں کے لئے مغربی کنارے میں 980 رہائشی یونٹوں کی تعمیر کے فیصلے پر ایک بیان میں اپنے رد عمل کا اظہار کیا، بیان میں کہا گیا ہے کہ صہیونی مغربی کنارے میں واقع "بیت المقدس" شہر کے جنوب میں اور فلسطینی زمینوں پر رہائشی یونٹوں کی تعمیر کا ارادہ رکھتے ہیں۔
فلسطینی وزارت خارجہ نے  اس بات پر زور دیا کہ اسرائیلی حکومت کا اپنے غیر قانونی اقدامات کے مطابق فیصلہ فلسطینیوں کے خلاف ہے اور فلسطین کی زمینوں کو ہڑپنے  اور بتدریج لوٹ مار کے پروگرام کے مطابق ہے۔
بیان میں کہا گیا ہے کہ اس فیصلے سے ظاہر ہوتا ہے کہ حالیہ سمجھوتہ کے بعد کیے جانے والے دعوے گمراہ کن اور غلط ہیں خاص کر جب سے سمجھوتہ اور امن کے حصول کو آپس میں جوڑنےکے لئے کوششیں کی جارہی ہیں۔
واضح رہے کہ متحدہ عرب امارات اور بحرین  جو کل (منگل) وائٹ ہاؤس میں صیہونی حکومت کے ساتھ باضابطہ سمجھوتہ کے معاہدے پر دستخط کرنے والے ہیں ، کا دعوی ہے کہ یہ معاہدہ فلسطین کے مسئلے کو حل کرنے میں معاون ثابت ہوگا۔
یادرہے کہ گذشتہ روز بحرین کے وزیر خارجہ نے دعویٰ کیا تھا کہ صیہونی حکومت کے ساتھ ملک کے معاہدے کا مقصد فلسطینیوں کے حقوق کی بحالی اور خطے میں استحکام اور سلامتی قائم کرنا ہے جبکہ ایک طرف صیہونی بستیوں کی تعمیر کررہے ہیں اور دوسری طرف فلسطینیوں کے گھروں کے ساتھ مسجد کو بھی مسمار کرنے کی تیاریوں میں لگے ہوئے ہیں  کیونکہ انھوں نے اس کام کے لیے عرب حکمرانوں سے پہلے ہی اجازت لے رکھی ہے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین