Code : 3160 49 Hit

جنرل قاسم سلیمانی کی شہادت سے قدس فورس کی سرگرمیوں میں کوئی فرق نہیں آیا:صیہونی تجزیہ کار

ایک صہیونی تجزیہ کار نے اعتراف کیا کہ پاسداران انقلاب کی قدس فورس کی سرگرمیاں اسی طرز کے ساتھ جاری ہیں جیسے جنرل قاسم سلیمانی کی زندگی میں جاری تھیں۔

ولایت پورٹل:صیہونی اخباریدعوت احرنوٹ کے تجزیہ کار اعتراف کیا کہ اسرائیلیوں نے سوچا تھا کہ  کمانڈر قاسم سلیمانی کے قتل کے بعد ایرانی شام میں اپنی سرگرمیوں کا جائزہ لے گا اور ان پر نظر ثانی کرئے گا  لیکن اب یہ بات واضح ہوگئی ہے کہ قدس فورس کی سرگرمیاں ویسے ہی جاری ہیں جیسے  میجر جنرل سلیمانی کی زندگی کے دوران جاری تھیں
انھوں نے دعوی کیا کہ ایران اسرائیل کے ساتھ شامی  اورلبنانی سرحد پر شمالی علاقوں میں معمول کے مطابق اپنے تین کاموں کو جاری رکھے ہوئے ہے۔
پہلا: ایسی صلاحیتوں کی تعمیر کرنا جو گولن کی پہاڑیوں پر اسرائیلی افواج کو نقصان پہنچائیں اور اسرائیلی بستیوں اور کیمپوں پر بمباری یا دراندازی کے لئے تیار کریں۔
دوسرا: شام میں اپنے اتحادیوں کو جدید اور منفرد ہتھیاروں کی منتقلی۔
تیسرا ، اسرائیل کے خلاف جنگ میں استعمال کرنے کے لئے پوائنٹ ٹو پوائنٹ میزائلوں کی تیاری۔
بن یشائی نے یہ بھی اعتراف کیا کہ جنرل سلمانی کے قتل کے بعد اسرائیلوں کی جو امیدیں بندھی تھیں ایران نے شامی حکومت کے ساتھ مل کر ان پر پانی پھیر دیا ہے۔
واضح رہے کہ واشنگٹن کے دہشتگردانہ اقدام میں  قدس فورس کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کیے جانے کے  دو ماہ بعد بھی  گذشتہ ہفتہ پینٹاگون کے چیف نے کے میجر جنرل قاسم سلیمانی کے قتل پر مبنی  امریکی صدر کے فیصلے کا دفاع کیا ہے۔


1
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین