صیہونی دشمن مزاحمتی تحریک کو اپنے وجود کے لیے خطرہ سمجھتا ہے:حزب اللہ

لبنانی پارلیمنٹ میں مزاحمت کے وفادار دھڑے کے سربراہ نے اس بات پر زور دیا کہ صیہونی دشمن مزاحمت کو اپنے موجودیت کے لیے خطرہ سمجھتا ہے۔

ولایت پورٹل:المنار چینل کی رپورٹ کے مطابق لبنانی پارلیمنٹ میں مزاحمت کے وفادار دھڑے کے سربراہ محمد رعد نے ایک تقریر میں کہا کہ ہم جلد از جلد حکومت کی تشکیل کے خواہاں ہیں اور مختلف فریقوں سے مزید حصص کے لیے مقابلے کے بغیر خاص طور پر خطے اور لبنان کی حساس صورتحال میں حکومت جلد از جلد تشکیل دی جائے تاکہ حائل رکاوٹوں کو دور کیا جا سکے اور صدارتی انتخابات کے انعقاد کے لیے میدان تیار کیا جائے۔
انہوں نے اعلان کیا کہ پہلے تو صیہونی دشمن ہمیں ایک تدبیری خطرہ اور نقصان کا سبب سمجھتا تھا لیکن اب وہ اس مقام پر پہنچ گیا ہے کہ مزاحمت کو اپنے خلاف ایک اسٹریٹیجک خطرہ سمجھتا ہے بلکہ اب وہ مزاحمت کو اپنے وجود کے خلاف ایک وجودی خطرہ سمجھتا ہے۔
لبنانی پارلیمنٹ میں مزاحمت کے وفادار دھڑے کے سربراہ نے تاکید کی کہ صیہونی دشمن نے مزاحمت کے خوف سے مقبوضہ فلسطینی سرزمین کو علاقے میں مغرب کے لیے جارحانہ فوجی چھاؤنی میں تبدیل کر دیا ہے۔
انہوں نے صیہونی حکومت کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانے کے خطرات اور نتائج کے بارے میں خبردار کیا اور تاکید کی کہ دشمن اس مزاحمت پر حملہ کرنا چاہتا ہے جو عرب اور اسلامی دنیا میں اپنی صلاحیتوں کو فروغ دے رہی ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین