Code : 2559 38 Hit

فلسطین میں انتخابات کرانے کے لیے مزاحمتی تحریک ہتھیار ڈال ڈالنا ہوں گے؛فتح تحریک کی شرط

آزادی فلسطین کے لیے بننے والے پیپلز فرنٹ کے ایک رکن نے کہا ہے کہ فتح تحریک نے شرط رکھی ہے کہ انتخابات اسی صورت میں ہوسکتے ہیں کہ مزاحمتی تحریک ہتھار ڈال دے۔

ولایت پورٹل:فلسطین آنلائن کی رپورٹ کے مطابق آزادی فلسطین کے لیے بننے والے پیپلز فرنٹ کےرکن ایاد عوض الله نے کہا ہے کہ فتح تحریک الیکشن کےراستہ میں رکاوٹیں کھڑی کررہی ہے،انھوں نے مزید کہا کہ الفتح کے عہدیداروں کے بہت سے بیانات سننے کو مل رہے ہیں  جو انتخابات میں رکاوٹ ہیں ، خاص طور پر  ان کی یہ شرط کہ صدارتی حکمنامے سے پہلے مزاحمت کے ہتھیاروں کو پی اے کے حوالے کرنا ہوگا ،یادر ہے کہ اس سے قبل فتح نے فلسطینی لبریشن آرگنائزیشن (پی ایل او) کی شناخت اور انتخابی فہرستوں سے اسرائیلی غاصب حکومتوں کی شناخت کرنے کی ضرورت جیسے مسائل کو بھی پیش کیا تھا ،پیپلز فرنٹ ممبر نے مزید کہا کہ اگلے مرحلے کے انتخابات کافی حیران کن ہوں گے،قابل ذکر ہے کہ فلسطینی تنظیم حماس نے اس سے پہلے ہی  تحریری طور پر  انتخابات کے لیے اپنی تیاری کا اعلان کر دیا ہے  ،حماس نے انتخابی فہرستوں یا امیدواروں کو سیاسی شرائط پر دستخط کرنے کی ضرورت کے بغیر انتخابات کرانے کی ضرورت پر زور دیا ہے،حماس نے قانون ساز کونسل ، صدارتی اور قومی اسمبلی کے لئے عام انتخابات کرانے کی ضرورت پر زور دیا ہے اور کہا ہے کہ قانون ساز کونسل  اور صدارتی انتخابات کے درمیان اگر تین ماہ کا فاصلہ بھی ہوجائے تو کوئی حرج نہیں ہے،جب تحریک حماس نے فلسطین میں عام انتخابات کے انعقاد کے بارے میں اپنی رضا مندی اور تیاری کا اعلان کیا تو فتح کے ایک سینئر رکن نے کہا کہ فلسطینی اتھارٹی نے اس مسئلہ کے لیے اپنی ایک نئی شرط کا اعلان کیا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम