Code : 2443 101 Hit

امریکہ عراق میں سکیورٹی فوسرز اورعوام کے درمیان پھوٹ ڈلنا چاہتاہے: عراقی حزب اللہ

عراقی حزب اللہ بٹالین کے ترجمان نے کہا کہ اس کے واضح ثبوت موجود ہیں کہ "الحشد الشعبی" عوام کے مطالبات کی حمایت کرتی ہے جو امریکہ کو کھٹکتا ہے لہذا وہ سکیورٹی فورسز اور عوام کے درمیان رخنہ ایجاد کرنے کی کوششوں میں لگا ہوا ہے۔

ولایت پورٹل:المیادین نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق عراقی حزب اللہ بٹالین کے ترجمان جعفر الحسینی نے گذشتہ سالوں میں ہونے والی غلطیوں کو عراق میں بڑھتے ہوئے عوامی مظاہروں کی وجہ قرار دیا اور الحشد الشعبی کی جانب سے مظاہروں کی حمایت کیے جانے والے بارے میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ  عراقی مزحمتی تنظمیں بھی مظاہروں میں موجود ہیں اور پر امن مظاہرین کی جان کی حفاظت کررہی ہیں،الحسینی نے عراق پر قبضے کے تمام منفی نتائج کا ذمہ دار امریکہ کو قرار دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ نے غیر امریکی کمپنیوں کو بھی  ملک میں بجلی گھر بنانے کے معاہدے کرنے کرنے سے منع کیا ہوا ہے،امریکیوں نے عراق پر دباؤ ڈالا کہ وہ چین کی طرف نہ جائے اور شام کے ساتھ ملحقہ  اپنی سرحدیں  بھی نہ کھولے،انھوں نے مزید کہا کہ عراقیوں کے خود جوش مظاہروں میں امریکی مداخلت کے ٹھوس ثبوت موجود ہیں جن کا مقصد  مظاہرین کو بہکانے کر عراقی عوام، سکیورٹی فورسز اور الحشد الشعبی کےدرمیان پھوٹ پیدا کرنا ہے اور اس کے لیے نیز اس کےبعد کے لیے انھوں باقاعدہ طور پر منصوبہ بندی کی ہوئی ہے،الحسینی نے مزید کہا کہ امریکیوں نے عراق میں دینی مرجیعت کو  خاموش کرنے کے لیے بھی منصوبہ بنایا ہو ہے،انھوں نے اقوام متحدہ کے وفد کے مجوزہ اصلاحاتی پیکج کو اچھا قرار دیتے ہوئے کہا کہ بدعنوان افراد کو کیفر کردار تک پہنچنا یہ وہ مطالبہ ہے جو عوام اس وقت کررہی ہے کیوں کہ عراق میں مظاہرے عوامی مطالبات کی بنا پر شروع ہوئے ہیں نہ کہ سیاسی وجوہات کی وجہ سے جیسا کہ امریکہ کہتا ہے ،انھوں نے ایران کو عراق کا اہم اتحادی کہتے ہوئے کہا کہ یہی وہ ملک ہے جس نے داعش کے ساتھ جنگ میں ہمارا ساتھ دیا ہے۔




0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम