Code : 2399 58 Hit

امریکہ اور اسرائیل عراق کے ٹکڑے کرنا چاہتے ہیں:عراقی پارلیمنٹ ممبر

ایک عراقی پارلیمنٹ نمائندہ کا کہنا ہے کہ امریکہ اور اسرائیل کا منصوبہ ہے کہ عراق کی موجودہ حکومت کو گرا کر اس ملک کو کئی حصوں میں تقسیم کر دیں۔

ولایت پورٹل:عراقی پارلیمنٹ اتحاد البناء کے نمائندہ حنین القدو نے عراق کے سلسلہ میں امریکہ کے نئے منصوبوں کا انتباہ دیتے ہوئے کہا کہ واشنگٹن حکام عراق  کے اہلسنت حضرات کے اعلی عہدہ داروں کے ساتھ تبادلہ خیال کررہے ہیں کہ  عراق کو شیعہ، سنی اور کرد تین حصوں میں بانٹ دے،امریکہ کا منصوبہ ہے کہ الانبار ، صلاح الدین  اور نینیوا ریاستوں کو اہلنست کو دیا جائے،القدو کا کہنا ہے کہ کرد بھی اس منصوبہ کی حمایت کررہے ہیں تاکہ عراق سے الگ ہوکر انھیں بھی کچھ مل جائے،عراقی پارلیمنٹ ممبر کا کہنا ہے کہ امریکہ اپنی آخری حد تک کوشش کررہا ہے کہ عراق کو تقسیم کردیا جائے اسی لیے وہ موجودہ حکومت کو گرانے کے در پے ہے،عراقی الفتح اتحاد نے بھی کل کہا تھا کہ امریکہ اور صیہونی  کردستان میں پھر سے ریفرنڈم کرانے کی کوشش کررہے کہ تا کہ شمالی عراق کے کئی صوبوں کو اس ملک سے الگ کر دیا جائے،یادرہے کہ عراق میں 25اکتوبر سے دوسرے مرحلے کے اعتراض شروع ہوچکے ہیں جبکہ بعض ماہرین کا شروع سے ہی کہنا ہے کہ  ان مظاہروں کے پیچھے امریکہ،متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب کا ہاتھ ہے جو کئی مہینوں سے ان مظاہروں کے لیے منصوبہ بندی کررہے تھے،ماہرین کا کہنا ہے کہ امارات اور امریکہ منصوبے  بنا رہے ہیں اور سعودی عرب پیسہ خرچ کر رہا ہے،یہ ممالک عراقی عوام کے قانونی مظاہروں سے غلط فائدہ  اٹھا رہے  اور ملک کے اندر کی بھی کچھ سیاسی جماعتیں میلے پانی سے مچھلیاں پکرنے کی کوشش کر رہی ہیں۔

0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम