Code : 2574 48 Hit

امریکہ عراقی حکومت کو بتائے بغیرعین الاسد اڈے پر اسلحہ بھیجتا ہے:عراقی پارلیمنٹ ممبر

ایک عراقی پارلیمنٹ ممبر نے کہا ہے کہ امریکہ الانبار صوبہ میں واقع عین الاسد علاقہ میں اپنے فوجی اڈے میں لگاتار اسلحہ سپلائی کر رہا ہے اور عراقی حکومت کو اس کے بارے میں کچھ بھی نہیں بتاتا۔

ولایت پورٹل:المعلومہ نیوز ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق عراقی پارلیمنٹ کے سکیورٹی اور دفاعی کمیشن کے رکن ایناس المکصوصی نے اپنی سرزمین پر امریکی دہشت گردوں کی نقل و حرکت پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ عراقی حکومت کو بغیر بتائے ہوئے امریکہ الانبار صوبہ میں واقع عین الاسد علاقہ میں اپنے فوجی اڈے میں لگاتار اسلحہ سپلائی کر رہا ہے ،انہوں نے  مزید کہا کہ عراقی  حکومت کا امریکہ کے ساتھ برتاؤ تقریبا مبہم سے جس کی وجہ سے لوگوں اور پارلیمنٹ میں کافی تشویش پائی جاتی ہے،عراقی نمائندے کا کہنا ہے کہ واشنگٹن عراقی حکومت یا متعلقہ سکیورٹی ایجنسیوں کو نوٹس دیئے بغیر فوجی سازوسامان عراق بھیجتا ہے،المکصوصی نے مزید کہا کہ عراقی پارلیمنٹ کے سکیورٹی اور دفاعی کمیشن نے بار بار پارلیمنٹ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ عراق میں موجود امریکی فوجیوں کی تعداد معلوم کرئے لیکن کوئی فائدہ نہیں ہوا،ان کا کہناہے کہ پارلیمنٹ کی سکیورٹی اور دفاع کمیٹی کو امریکی سکیورٹی اور سرکاری اہلکاروں نیز فوجی  سازوسامان کی عراق  آمد کی اطلاع میڈیا کے ذریعے ہوتی ہے،آخر میں  عراقی نمائندہ نے کہا کہ زیادہ تر امریکی فوجی دوروں اور اقدامات کا باضابطہ طور پر اعلان نہیں کیا جاتا ہے،قابل ذکر ہے کہ کل ذرائع  ابلاغ نے اطلاع دی تھی کہ اردن  کی سرحدسے 500امریکی فوجی گاڑیاں عراق کے صوبہ الانبار میں امریکی فوجی اڈےعین الاسد میں داخل ہوئیں ہیں،ادھرعراقی بارڈر کراسنگ کے سربراہ ، علاءالدین القیسی نے اس خبر کے نشر ہونے  کے کچھ ہی دیر بعداعلان کیا  کہ "قبیلہ" اور "القائم" کے راستے امریکی فوج کے  عراق میں داخل ہونے کی خبر سراسر جھوٹ ہے۔





0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम