امریکہ داعش کے عناصر کو شام سے عراق منتقل کرنے کی کوشش کر رہا ہے:شامی پارلیمنٹ ممبر

شامی پارلیمنٹ ممبر نے متنبہ کیا کہ امریکہ داعش سے وابستہ عناصر کو شام سے راستے مختلف طریقوں عراق منتقل کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔

ولایت پورٹل:عراق کی المعلومہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق شامی پارلیمنٹ ممبر محمد جوخدار نے عراق اور شام کی سرحدوں پر امریکی فوجیوں کی نئی نقل و حرکت سے خبردار کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ عراق شام کی سرحد پر اپنی مشکوک نقل وحرکت اور دہشت گرد گروہوں کی حمایت سے جنگ جاری رکھنے کی کوشش کر رہا ہے۔
انہوں نے زور دے کر کہا کہ امریکہ کی زیرقیادت داعش کے خلاف بننے والےنام نہاد  بین الاقوامی اتحاد نے شام اور عراق سرحد پر اپنے فضائی حملے تیز کردیئے ہیں۔
شامی نمائندہ نے کہا کہ امریکہ داعش سے وابستہ نئے دہشت گرد گروہوں  کو مختلف طریقوں سے شام سے عراق منتقل کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔
یادرہے کہ امریکی اتحاد نے شام کے مشرقی صوبہ دیر الزور میں گذشتہ رات عراقی الحشد الشعبی فورسز کے ٹھکانوں پر بمباری کی۔
واضح رہے کہ امریکہ نے حال ہی میں داعش کی حمایت اور الحشد الشعبی کو کمزور کرنے کے لیے متعدد الحشد کمانڈروں پر پابندی عائد کی تھی۔
عراقی سیکیورٹی امور  کے ماہر عباس العرداوی نے یہ بھی کہا کہ واشنگٹن الحشد العشبی کے متعدد کمانڈروں پر پابندیاں عائد کرکے اس تنظیم سے وابستہ گروہوں کو مجرم قرار دینے کا ارادہ رکھتا ہے۔
عراقی ماہر نے اس بات پر زور دیا کہ امریکہ کی طرف سے عراق اور شام کی سرحدوں سے الحشد کو ہٹانے کی کوششوں کا مقصد داعش کے عناصر کو عراق میں  میں داخل کرناہے۔
عراقی ذرائع ابلاغ کایہ بھی کہنا ہے کہ امریکہ نے داعش کی معاونت کرتے ہوئے حال ہی میں الھول کیمپ سےداعش سے وابستہ 600خواتین اور بچوں کو عراق میں منتقل کیا ہے۔


1
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین