امریکہ ایشیاء میں بدامنی پھیلارہا ہے:چین

فلپائن میں چینی سفارتخانے نے ایشیاء میں امریکی ہنگامہ آرائی کی مذمت کرتے ہوئے زور دیا کہ واشنگٹن کو محاذ آرائی کی اشتعال انگیزی کا خاتمہ کرنا ہوگا۔

ولایت پورٹل:روئٹرز نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ایک سینئر امریکی عہدیدار کا تائیوان کا دورہ ، متعدد چینی کمپنیوں کی پابندیوں کی فہرست کے انکشاف اور واشنگٹن کے قومی سلامتی کے مشیر رابرٹ او برائن کے ریمارکس نے چینی وزارت خارجہ کو سخت تنقید اور ردعمل ظاہر کرنے پر مجبور کیا ہے، کل فلپائن کے دارالحکومت منیلا کے دورے کے دوران او برائن نے تائیوان کی سلامتی کے بارے میں امریکہ کے عزم کا اعادہ کیا اور فلپائن اور ویتنام کی حکومتوں کو بتایا کہ واشنگٹن چین کے ساتھ اپنے بحری تنازعہ میں ان کی حمایت کرتا ہے، فلپائن میں چینی سفارت خانے نے آج (منگل کو) ایک بیان میں کہا ہے کہ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ اس کا خطہ کا دورہ علاقائی امن اور استحکام کو فروغ دینے کے لیے نہیں ہے بلکہ امریکہ کے مفاداتی مفادات کے لئے خطے میں بدامنی پھیلانا ہے، بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکہ کو چاہئے کہ وہ بحیرہ جنوبی میں اپنی اشتعال انگیزی کا خاتمہ کرےنیز تائیوان اور ہانگ کانگ کے بارے میں غیر ذمہ دارانہ بیانات دینا بند کردے ، جو چین میں خالصتا اندرونی معاملات ہیں۔
یادرہے کہ امریکی قومی سلامتی کے مشیر نے بھی کل چین کو متنبہ کیا تھا کہ اگر وہ تائیوان کو ایک صوبے کی حیثیت سے الحاق کرنے کے لئے فوجی طاقت کا استعمال کرےگا تو اسے رد عمل کا سامنا کرنا پڑے گا۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین