یمن کے صوبہ مأرب کی آزادی سے امریکہ پریشان ہے؛لبنانی اخبار کی رپورٹ

امریکی یمنی شہریوں کی حمایت کا ڈھنڈورا پیٹنے کے بعد اس بار انصاراللہ کے خلاف اپنی افواج کی حمایت کا بہانہ بنا کر یمن میں مداخلت اور اس ملک کے صوبہ مأرب میں یمنی فورسز کے آپریشن بند کرانے کے درپے ہیں ۔

ولایت پورٹل:لبنان کے روزنامہ الاخبار کی رپورٹ کے مطابق یمن کے صوبہ مأرب میں یمنی فوج اور عوامی کمیٹیوں کے موجودہ آپریشن ، جس نے سعودی اتحاد کو پیچھے دھکیل دیا ہے ،  کے سلسلہ میں امریکہ کو تشویش لاحق ہے،امریکی وزارت خارجہ نے ایک بیان جاری کیا ہے جس میں یہ دعوی کیا گیا ہے کہ "مأرب پر حملہ فوری طور پر بند کیا جانا چاہئے اور اس کے لیے انھوں نے  بہانہ یہ بنایا ہے کہ اس صوبہ میں قریب دس لاکھ بے گھر افراد ہیں۔
واضح رہے کہ امریکہ کو آج تک سعودی اور اماراتی فضائی حملوں کے نتیجہ میں بے گھر ہونے یمنی پناہ گزینوں کی فکر نہیں تھی لیکن اب جب یمنی فوج نے خود کواس صوبے کے تیل کے کنوؤں کے قریب کرلیا ہے اوروہ  الرویک اسٹریٹجک کیمپ کے قریب پہنچ چکے ہیں جہاں سعودی فوجیں موجود ہیں تو امریکہ کو یمنی پناہ گزینوں کے بارے میں تشویش لاحق ہوگئی ہے۔
لبنانی اخبار نے یمن کی تازہ ترین صورتحال کا جائزہ لیتے ہوئے لکھا ہے کہ اس وقت مأرب کے تیل کے کنویں یمنی فوج کے نشانے پر ہیں اور اس کا مطلب یہ ہے کہ انصاراللہ تحریک پر دباؤ ڈالنے کے لئے جنگی اکائیاں لرز جائیں گی کیونکہ ان صنعتوں کے خلاف استعمال ہونے والے ایک انتہائی اہم معاشی اوزار کی کارکردگی ختم ہوجائے گی۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین