Code : 4885 3 Hit

امریکہ نے گذشتہ 6 سال میں عراق اور شام میں 13000 شہریوں کو ہلاک کیا ہے؛برطانوی تحقیقاتی ادارے کی رپورٹ

ایک برطانوی تحقیقاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق 2014 سےعراق اور شام میں واشنگٹن کے حملوں میں 13000 سے زیادہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

ولایت پورٹل:برطانوی ایئرویز انسٹی ٹیوٹ کی ایک رپورٹ کے مطابق  عراق اور شام میں گذشتہ چھ سالوں میں، سن 2014 سے اب تک امریکہ کے زیرقیادت اتحادکے حملوں میں 13000 سے زیادہ شہری ہلاک ہوچکے ہیں۔
واضح رہے کہ برطانی ادارے نے امریکہ کی زیرقیادت بین الاقوامی اتحاد کے ذریعہ داعش کا مقابلہ کرنے کے بہانے 2014 میں شام اور عراق میں اپنی کارروائی کا آغاز کرنے کے بعد پہلی بار اتحادی فوج  کے جرائم کے بارے میں  ایک رپورٹ جاری کی گئی ہے جس میں دونوں ممالک میں تقریبا تمام شہری ہلاکتوں کی تصدیق کی گئی ہے۔
ائیر وار انسٹی ٹیوٹ کے فراہم کردہ اعداد و شمار کے مطابق ، گذشتہ چھ سالوں کے دوران عراق اور شام میں اتحادی فوج کے فضائی حملوں میں ہلاک ہونے والے عام شہریوں کی تعداد 8310 سے بڑھ کر 13187 ہوگئی ہے۔
داعش کے خلاف امریکہ کے زیرقیادت اتحاد کے سابق ترجمان  مائیل کیگنس نے ائیر وار کو بتایا کہ یہ اعداد وشمار جاری کرنے کی بنیادی وجہ شفافیت ہے اور یہ اعدادوشمار تصدیق شدہ ہیں۔
یادرہے کہ امریکہ اور 68 ممالک سے تعلق رکھنے والے اس کے اتحادیوں پر عراق اور شام میں عام شہریوں کو نشانہ بنانے اور ان کے قتل کا متعدد بارالزام عائد کیا گیا ہے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین