Code : 2313 86 Hit

امریکہ و اسرائیل عراق کا امن و سکون چھیننا چاہتے ہیں: ہادی عامری

ہم اپنے جوانوں کی مشکلات کو نظرانداز کرکے عراق کو ایک ترقی یافتہ ملک نہیں بنا سکتے چونکہ یہ وہی جوان ہیں جنہوں نے داعش کے خلاف عظیم معرکہ سرکیا ہے اور انہیں کے خون کے باعث عراق کامیابی سے ہمکنار ہوا ہے۔

ولایت پورٹل: موصولہ اطلاعات کے مطابق عراق کے سب سے طاقتور سیاسی اتحاد’’الفتح‘‘ کے سربراہ ہادی عامری نے کربلا شہر میں منعقد ایک پریس کانفرنس میں بتلایا کہ اس وقت عراق میں بہت سی مشکلات پائی جاتی ہیں جن میں، روزگار اور گھر سب سے بڑی مشکلات ہیں۔
فتح کے سربراہ نے عراق کی تمام مشکلات کی بنیاد سابق حکومت کی پالیسیز اور داعش کے ساتھ 5 برس کی جاں فرسا جنگ کو قرار دیتے ہوئے کہا کہ گذشتہ حکومت کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے آج کالج اور یونیورسٹیز کے فارغ طلباء بے روزگار گھوم رہے ہیں اور لوگوں کا حکومت پر تنقید کرنا یہ ان کا جمہوری اور قانونی حق ہے۔
چونکہ ہم اپنے جوانوں کی مشکلات کو نظرانداز کرکے عراق کو ایک ترقی یافتہ ملک نہیں بنا سکتے چونکہ یہ وہی جوان ہیں جنہوں نے داعش کے خلاف عظیم معرکہ سرکیا ہے اور انہیں کے خون کے باعث عراق کامیابی سے ہمکنار ہوا ہے۔
الفتح کے سربراہ نے اس کانفرنس کے دوران خارجہ دشمنوں سے عراقی قوم کو آگاہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ عراق کی مشکلات حل ہوجائیں گی لیکن امریکہ و اسرائیل نہیں چاہتے کہ عراقی قوم امن و امان سے رہے چونکہ سامراجی حکومتیں فتنوں میں ہی اپنی سیاست کی روٹیاں سیکتی ہیں۔
یاد رہے کہ اربعین سے چند دن پہلے ہی عراق میں احتجاجات کا ایک سلسلہ شروع ہوا تھا جسے حکومت کی تدابیر اور اربعین حسینی(ع) کے پیش نظر کچھ شرائط پر معاہدہ کرکے روک دیا گیا تھا۔چنانچہ کچھ سوشل میڈیا سے اڑتی ہوئی افواہیں یہ بھی ہیں کہ عراق میں ایک بار پھر احتجاج شروع کروانے کی سازش رچائی جارہی ہے اور جس میں دشمنوں کی کارستانیاں شفاف نظر آرہی ہیں۔



0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम