عراقی عوام کے قتل عام کے ذمہ دار امریکہ،آل سعوداور صیہونی ہیں: عراقی حزب اللہ

عراقی حزب اللہ کے سکیورٹی عہدیدار نے زور دے کر کہا کہ امریکہ ، صیہونی حکومت اور سعودی عرب ان دنوں عراق میں ہونے والی ہلاکتوں کے ذمہ دار ہیں۔

ولایت پورٹل:صابرین نیوزایجنسی کی ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق عراق  الحشدد الشعبی تنظیم کی شاخ عراقی حزب اللہ کے سکیورٹی عہدیدار ابوعلی العسکری نے ہفتے کے روز سعودی عرب پر ڈرون حملے میں عراقی مزاحمتی گروپ کے آپریشن کی تعریف کی، عراقی حزب اللہ کے سکیورٹی سربراہ  نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر لکھا ہےکہ ہفتے کے روز الحشد الشعبی کے گیارہ ستارے چمک اٹھے اور انھوں نے وطن عزیز کا آسمان روشن کیا ،  ہم اس نقصان پر اظہار تعزیت کرتے ہیں جبکہ وہ خوش ہیں، انہوں نے مزید کہا ، ہم اس بات کا اعادہ کرتے ہیں کہ عراق میں ہونے والی ہلاکتوں  کا فیصلہ صیہونی ، امریکی اور سعودی کرتے ہیں نیز اس کا جواب بھی اس منبع کو دیا جانا چاہیے نہ کہ کسی اور کو۔
العسکری نے زور دے کر کہاکہ اس موقع پر ، ہم وعدہ حق برگیڈ کے جوانوں کے ہاتھ چومتے ہیں اور انھیں بن سلمان کے گھونسلے پر حملے کی مبارکباد دیتے ہیں،اور ہم عراق اور خطے میں اپنے مجاہدین بھائیوں کو بھی یہی راستہ اختیار کرنے کا حکم دے رہے ہیں نیز کوئی بھی انہیں خدا کی راہ پر چلنے سے نہیں روک سکے گا،یادرہے کہ عراقی گروپ وعدہ حق برگیڈ نے اتوار کی صبح اپنےجاری کردہ ایک بیان میں سعودی دارالحکومت ریاض میں ہفتے کے روز ہونے والی کارروائی کی ذمہ داری قبول کی ،جبکہ یمن پر حملہ کرنے والے سعودی عرب کے  زیرقیادت اتحاد نے سنیچر کی دوپہر کو دعوی کیا تھا کہ اس نے ریاض  کی فضا  میں "دشمنانہ ہدف" کو روک کر تباہ کردیا ہے، اس اتحاد نے حملے کی قسم (ڈرون یا میزائل) کی وضاحت نہیں کی لیکن یمن کی انصار اللہ تحریک پر یہ حملہ کرنے کا الزام عائد کیا ، تاہم یمنی مسلح افواج کے ترجمان نے ان الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہاکہ یمنی مسلح افواج نے سعودی عرب کے خلاف حالیہ دنوں میں کوئی کارروائی نہیں کی ہے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین