یمن میں جنگ روکنے کے لیے اقوام متحدہ کو فوری طور سامنے آنا چاہیے؛یمنی پارلیمنٹ کا مطالبہ

یمنی پارلیمنٹ ممبروں نے یمن میں جنگ جاری رکھنے کے لئےاپنی حمایت کے خاتمے پر مبنی امریکی حکومت کے طرز عمل کا خیرمقدم کیا۔

ولایت پورٹل:المیادین نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق صنعا میں یمنی قانون سازوں نے یمن میں جنگ جاری رکھنےکے لئے حمایت ختم کرنے کے بارے میں امریکی انتظامیہ کے نئے انداز کا خیرمقدم کیا، یمنی پارلیمنٹ کے نمائندوں نے اقوام متحدہ سے یمن کے جنگ اور محاصرے کے خاتمے کے لئے فوری طور پر اقدام کرنے کا مطالبہ کیا، ان کا کہنا تھا کہ امریکی فیصلہ امریکی پالیسی میں ایک مثبت قدم تھا۔
یمنی نمائندوں نے مزید کہا کہ  یمنی عوام کی مشکلات کے خاتمے کے لئے امریکہ کو اس فیصلے پر عمل درآمد کرنا چاہئے، انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اقوام متحدہ اور سلامتی کونسل سمیت بین الاقوامی اداروں کو یمن کی زمینی ، سمندری اور فضائی سرحدوں کو دوبارہ کھولنے جنگ اورناکہ بندی کے خاتمے  کے لئے فوری طور پر کارروائی کرنا ہوگی، واضح رہے کہ جمعرات کو امریکی قومی سلامتی کے مشیر نے یمنی جنگ کی حمایت روکنے کے لئے امریکی صدر جو بائیڈن کے مؤقف کا اعلان کیا تھا۔
یاد رہے کہ چھ سال پہلے سعودی عرب نے امریکہ کی حمایت کے ساتھ کچھ دیگر عرب ریاستوں کے ساتھ مل کر یمن کے خلاف ایک اتحاد تشکیل دیا تھا اور اس غریب ملک پر اپنی جارحیت کا آغاز کیا جو آج تک جاری ہے،مذکورہ اتحاد نے چاروں طرف سے یمن کا محاصرہ کیا ہوا ہے جس کے نتیجہ میں اس ملک کی عوام شدید مشکلات کا شکار ہے یہاں تک کہ انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کا کہنا ہے کہ اس ملک میں کبھی بھی تاریخ کا سب سے بڑا انسانی بحران رونما ہو سکتا ہے اس کے علاوہ سعودی اتحاد روزانہ کی بنیاد پر یمن پر بمباری کر رہا ہےجس میں زیادہ تر خواتین اور بے گناہ بچے جارحیت کا نشانہ بنتے ہیں۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین