اقوام متحدہ امریکہ اور سعودی عرب کی غلام ہے:انصار اللہ

یمن کی مزاحمتی تحریک انصار اللہ  کےرہنما نے اقوام متحدہ کے سافر آئیل ٹینکر کے سلسلہ میں اپنے وعدے پورے کرنے میں ناکام رہنے پر سخت تنقید کی ہے۔

ولایت پورٹل:یمن کی مزاحمتی تحریک انصار اللہ کے رہنما محمد علی الحوثی نے ٹویٹ کیا کہ  انہوں(اقوام متحدہ)  نے کہا کہ صافر ٹینکر کی لیکج ایک بہت بڑا خطرہ اور ماحولیاتی تباہی ہوسکتی ہے ، ہم نے کہا کہ آپ اپنے ماہرین کو لاکر آکر اس کی مرمت کریں لیکن دن اور مہینے گزر گئےپر کوئی جواب نہیں ملا، انہوں نے مزید کہاکہ اقوام متحدہ کے اس اقدام سےدنیا کے سامنے یہ ثابت ہوگیا کہ ان کے نعرے کھوکھلے ہیں نیز ان کے اقدامات امریکی ، برطانوی ، سعودی ، اماراتی اور ان کے اتحادیوں کی خدمت میں جبکہ یمنی عوام کے خلاف ہیں۔
 اپنے ٹویٹ کے آخر میں الحوثی نے ایک بار پھر اقوام متحدہ کو صافر ٹینکر کے کسی بھی رساؤ کے لئے ذمہ دار ٹھہرایا،یادرہے کہ صافر ٹینکر گذشتہ پانچ سالوں سے حدیدہ کے راس عیسی آئل پورٹ کے سامنے بحر احمر میں لنگر انداز ہوا ہے، جبکہ اقوام متحدہ کے عہدیداروں نے اس میں سے تیل لیک ہونے کا انتباہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ صافر سے لیک ہونے تیل کی مقدار الاسکا میں سن 1989 میں ایکسن ویلڈس  سے لیکن ہونے والے تیل کی مقدار سے چار گنا زیادہ ہوسکتی ہے۔
یادرہے کہ انصار اللہ نے  نومبر میں  اقوام متحدہ کے ماہرین کو صافر ٹینکر میں داخل ہونے اور اس کا جائزہ لینے کی اجازت دی  لیکن اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل بانکی مون کے ترجمان اسٹیفن دوجارک نے کہا کہ وہ انصاراللہ کے تبصرے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ وہ صافر کا دورہ کرنے کی اجازت دینے  پر نظر ثانی اور غور کررہے ہیں،یہی وجہ ہے کہ ابھی تک یہ پتہ نہیں چل سکا ہے کہ ٹنکر کا جائزہ کب لیا جائے گا۔
واضح رہے کہ  اس سے قبل  انصاراللہ نے اقوام متحدہ پر صافرٹینکر کے سلسلہ میں ہونے والے معاہدے کے نفاذ کو روکنے کے لئے اپاہج حالات پیدا کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا تھا کہ اقوام متحدہ نے اس ٹینکر کے آس پاس تین میل کے علاقے میں سکیورٹی کا مطالبہ کیا ۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین