Code : 1412 12 Hit

امریکہ کو شام سے فوری طور پر نکل جانا چاہیے:ایران

اسلامی جمہوریہ ایران نے ایک بار پھر زوردیا ہے کہ امریکا کو شام میں اپنی غیرقانونی موجودگی ختم کرکےوہاں سے فوری طور پر نکل جانا چاہئے۔

ولایت پورٹل:اقوام متحدہ میں ایران کے مستقل مندوب مجید تخت روانچی نے شام کے صوبے ادلب کے بارے میں سلامتی کونسل کے اجلاس میں کہا کہ امریکا کو چاہئے وہ فوری طور پر شام میں اپنی غیر قانونی فوجی موجودگی ختم کردے، ایرانی مندوب نے کہا کہ ایران آستانہ امن کے عمل کے ضامن ملکوں روس اور ترکی کے ساتھ مل کر ادلب میں پرامن علاقے کے قیام  کی حمایت کرتا ہے، ان کا کہنا تھا کہ ادلب میں کشیدگی سے پاک امن کا علاقہ قائم کئے جانے کے معاملے کا اس صوبے میں دہشت گردوں کے خلاف شامی فوج کی کارروائی سے کوئی تعلق نہیں ہے، اقوام متحدہ میں ایران کے مندوب نے کہا کہ ادلب میں محفوظ اور پرامن علاقے کا قیام صرف ایک وقتی اقدام ہے جس کا مقصد عام شہریوں کی جان کی حفاظت کرنا ہے انہوں نے کہا کہ ادلب میں کشیدگی سے دور علاقے کے قیام کا مقصد ہرگز یہ نہیں ہے کہ اس علاقے کو دہشت گردوں کی پناہ گاہ بنادیائے، مجید تخت روانچی نے اس بات کا ذکرکرتے ہوئے کہ دہشت گردوں نے اس وقت ادلب میں لاکھوں عام شہریوں کو یرغمال بنا رکھا ہے کہا کہ اس علاقے پر دہشت گردوں کا قبضہ جاری رہنے اور شامی فوجیوں نیز عام شہریوں پر ان کے مسلسل حملوں کی بنا پر انہیں اس بات کی ہرگز اجازت نہیں دی جاسکتی کہ غیر معینہ مدت تک کے لئے اس علاقے میں موجود رہیں، ایرانی مندوب نے کہا کہ اگر یہ صورتحال جاری رہتی ہے تو دہشت گرد  عناصر مزید عام شہریوں کا قتل عام کریں گے،  واضح رہے کہ شام کا صوبہ ادلب دہشت گردوں کا آخری اڈہ ہے، اس درمیان اقوام متحدہ میں شام کے مستقل مندوب بشار جعفری نے بھی سلامتی کونسل کے اجلاس میں دہشت گردوں کی طرفداری اور حمایت کرنے پر امریکا کو شدید ہدف تنقید بنایا اور کہا کہ ادلب میں تحریرالشام نامی دہشت گرد گروہ شامی فوج پر الزام عائد کرنے کے لئے نئے کیمیائی حملے کی تیاری کررہا ہے، روسی مندوب ویسلی نبنزیا نے بھی اس بات کا ذکر کرتے ہوئے کہ ادلب میں دہشت گردوں نے عام شہریوں کو یرغمال بنالیا ہے کہا کہ شام کے صوبے ادلب میں ہر حال میں دہشت گردی کا صفایا ہونا چاہئے۔
سحر


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम