انصار اللہ کے خلاف امریکی فیصلہ اس ملک کو مزید تباہی کی طرف لے جائے گا؛یمنی خواتین یونین کا انتباہ

یمنی خواتین یونین نے انصاراللہ کو دہشت گرد قرار دینے کی امریکی کارروائی کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس فیصلے سے یمن کی موجودہ خراب صورتحال مزید بڑھ جائے گی۔

ولایت پورٹل:صبا نیوز ایجنسی  کی رپورٹ کے مطابق یمنی خواتین یونین نے یمنی انصار اللہ تحریک کو دہشت گردی کی فہرست میں شامل کرنے کے امریکی اقدام کی مذمت کی ہے، بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ فیصلہ ایک ایسے وقت میں کیا گیا ہے جب یمن اور اس کے عوام مسلسل محاصرے اور جارحیت کے باعث سب سے بڑے انسانی بحران میں مبتلا ہیں، یمنی خواتین یونین نے زور دے کر کہا کہ اس فیصلے سے انسانیت سوز بحران مزید بڑھ جائے گا ، خوراک اور ادویات کی درآمدات رک جائیں گی اور معاشی تباہی کے عمل میں تیزی آئے گی، یونین نے بالآخر یمنی عوام کے خلاف اس سخت فیصلے کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا۔
یادرہے کہ گذشتہ ہفتے امریکی وزیر خارجہ مائک پومپیو نے یمن کی انصار اللہ مزاحمتی تحریک کو  دہشت گرد تنظیم قرار دیے جانے کے اپنے فیصلےسےامریکی  کانگریس کو آگاہ کرتے ہوئے  اعلان کیا تھا کہ میں انصاراللہ کے تین رہنماؤں ، عبدالمالک الحوثی ، عبدالخالق بدرالدین الحوثی اور عبداللہ یحیی الحکیم کو عالمی دہشت گرد قرار دینے کا ارادہ رکھتا ہوں جس کے بعد وائٹ ہاؤس کی فارن افیئرز کمیٹی کے چیئرمین جارج مائکس کی سربراہی میں امریکی ایوان نمائندگان کے 25 اراکین نے ایک خط میں   یمنی انصار اللہ تحریک کو دہشت گرد تنظیم قرار دینے کے امریکی حکومت کے قلیل نگاہی فیصلے کی مذمت کی ۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین