رہبر معظم کا افغانستان کے بارے میں واضح اور روشن ہے:پاکستانی تحقیقاتی سنٹر کے ڈائریکٹر

پاکستان کے پیس اینڈ ڈپلومیسی (آئی پی ڈی ایس) سنٹر کے ڈائریکٹر نے افغانستان کی صورتحال پر  ایرانی سپریم لیڈر کے حالیہ ریمارکس کو عین حقیقت پر مبنی ، واضح اور خطے سے امریکی فوجیوں کے شرمناک انخلا کی جانب براہ راست اشارہ قرار دیتے ہوئے کہاکہ  آیت اللہ خامنہ ای کا موقف ایک موثر دلیل  پر مبنی ہے کہ خطے میں امریکی موجودگی ایران کا محاصرے کرنے کے لیے ہے۔

ولایت پورٹل:پاکستان کے پیس اینڈ ڈپلومیسی (آئی پی ڈی ایس) سنٹر کے ڈائریکٹر محمد آصف نور نے اسلام آباد میں ایرنا کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں کہاکہ ایران میں پالیسی کی تشکیل میں آیت اللہ خامنہ ای کا اہم کردار ہے اور وہ خارجہ پالیسی کے اہم مراحل کی تصدیق کے لیے روحانی اختیار کا ایک ذریعہ ہیں۔
انھوں نے ایران کے صدر  13 ویں کابینہ اور اراکین کے ساتھ پہلی ملاقات کے دوران افغانستان کی صورتحال پر سپریم لیڈر کے ریمارکس کا حوالہ دیتے ہوئے کہاکہ رہبر ایران نےاپنی حالیہ تقریر میں 20 سال بعد افغانستان سے شرمناک امریکی انخلاء کا صحیح طور پر تبصرہ کیا جو اس حقیقت کی عکاسی کرتا ہے کہ ایران افغانستان کے ماضی ، حال اور مستقبل کو نظر میں رکھتے ہوئے طالبان حکومت کے ساتھ تعلقات کو دیکھتا ہے ۔
 پاکستانی سفارتی  سنٹر کے ڈائریکٹر نے کہا کہ آیت اللہ خامنہ ای بالکل ٹھیک کہتے ہیں کہ حکومتیں بدلتی رہتی ہیں جبکہ لوگ اور ممالک ایک جیسے رہتے ہیں، انہوں نے ایک اہم پالیسی کی طرف بھی اشارہ کیا کہ حکومتوں کے ساتھ اسلامی جمہوریہ ایران کے تعلقات کی نوعیت بھی ایران کے ساتھ ان کے تعلقات کی نوعیت پر منحصر ہے۔
 انہوں نے مزید کہاکہ یہ سچ ہے کہ یہ ایران ایک آزاد حکومت کے طور پر کام کرتا ہے جواس ملک کی حکومت کے ساتھ دوسرے ممالک کی حکومتوں کے رویے پر ردعمل کو ظاہر کرتا ہےنیزبین الاقوامی نظام بھی ایسا ہی کرتا ہے،تہام یہاں یہ کہنا ضروری ہے کہ امریکہ نے افغانستان کی آزادی کو چھیناہے اور ہمیشہ مخالف قوتوں کی حمایت کی ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین