Code : 4059 9 Hit

ایک ماہ میں یمن پر 590 سے زائد فضائی حملے؛سعودی اتحاد نے جارحیت کا ریکارڈ توڑ دیا

ایک فوجی ذریعے نے گذشتہ جولائی میں یمن پر سعودی عرب کے اتحادیوں کی جانب سے 598 فضائی حملوں کی اطلاع دی۔

ولایت پورٹل:المسیرہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ایک باخبر فوجی ذرائع کا کہنا ہے کہ سعودی امریکی اتحاد کے جنگی طیاروں نے گذشتہ ماہ (جولائی) یمنی صوبوں اور سرحدی علاقوں پر 598 حملے کیے، ذرائع نے بتایا کہ ان میں سے نصف فضائی حملے مشرقی یمن میں صوبہ مأرب پر کیے گئے تھے۔
واضح رہے کہ حال ہی میں  لبنان کے اخبار الاخبار نے برطانیہ کی  جانب سے یمن پر فضائی حملے کرنے میں   سعودی عرب کی مکمل حمایت کی وضاحت کرتے ہوئے اعلان کیا تھا کہ یمن میں جنگ کا فضائی حصہ برطانیہ نے مکمل طور پر اپنے قبضے میں لے لیا ہے، ایک ریٹائرڈ برطانوی فوجی  کا کہنا ہے کہ یمنی سرحد کے قریب سعودی فوجی اڈوں  میں تقریبا 6300 برطانوی فوجی موجود ہیں جو BAE Systems  کمپنی میں کام کرتے ہیں،انھوں نے اور سعودی فوج کے ساتھ اربوں ڈالر کے معاہدے کیے ہوئے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ اگر ہم یہاں نہ ہوتے تو سعودی لڑاکا طیارے ایک یا دو ہفتے میں یمن کی فضا سے غائب ہوجاتے۔
واضح رہے کہ سعودی عرب امریکہ اور بطانیہ سمیت متعدد مغربی ممالک کے ساتھ مل کر پانچ سال سے  بے گناہ یمنی عوام کا خون بہا رہا ہے   اور اس جارح اتحاد کی بمباری کا شکار زیادہ تر خواتین اور بچے ہوتے ہیں لیکن انسانی حقوق کی دہائی دینے والی نام نہاد بے حس تنظمیوں  کے کان پر جوں تک نہین رینگتی البتہ اقوام متحدہ نے  سعودی عرب کو بے گناہ یمنی بچوں کو قتل عام کرنے کا خوب صلہ دیا ہے اور  اس کا نام بچوں کے حقوق پامال کرنے والے ممالک کی فہرست میں سے نکال دیا ہے اسی لیے تو انصاف پسند قومیں کہتی ہیں کہ اقوام متحدہ کے فیصلے سعودی ڈالروں کی بنیاد پر ہوتے ہیں۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین