Code : 2537 46 Hit

شام مزاحمتی تحریک کا بہت بڑا حامی ہے:حماس

حماس کے سیاسی دفتر کے نائب سربراہ نے حماس کی طرف سے شام کے ساتھ تعلقات کو بحال کرنے کی کوشش کا اعلان کرتے ہوئے شام کو مزاحمتی تحریک کا ایک بڑا حامی قراردیا۔

ولایت پورٹل:حماس کے سیاسی دفتر کے نائب سربراہ خلیل الحیہ نے مزاحمتی تحریک کے مرکز(تہران سے بیروت تک) کے موضوع پر الاخبار  روز نامہ  کے نامہ نگار کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حالات میں کشیدگی پیدا ہونے کی صورت میں بھی یہ رابطہ منقطع نہیں ہوا  یہاں تک کہ بحران کے عروج کے وقت بھی تحریک کے مرکز نے فوجی رابطہ ختم نہیں کیا،الحیہ  نے شام کو "مزاحمت کا ایک بڑا حامی" قرار دیتے ہوئے دمشق تک پہنچنے کی تحریک کی کوشش کا اعلان کیا اور کہا: "ہم دنیا کے تمام ممالک خصوصا مزاحمت پر یقین رکھنے والے ممالک کے ساتھ اچھے تعلقات کے خواہاں  ہیں، ہم شام میں تھے اور مختلف وجوہات کی بنا پر وہاں سے چلے آئے ،وہاں  بحیثیت قوم ہمارے حالات بہت اچھے  تھے، ہم شامی بھائیوں کے لیے دعا کرتے ہیں کہ  وہ  اپنے ملک واپس آسکیں  تاکہ وہ امت کے مقاصد کی خدمت میں اور فلسطین کے مقصد کی حمایت کرنے میں پہلے کی طرح اپنا کردار ادا کرسکیں،انہوں نے اسرائیلی میڈیا کی جانب سے  حماس کے ساتھ طویل المیعاد فائر بندی معاہدے کے دعووں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ حماس اپنا کام کرنے کا طریقہ تبدیل کر سکتی ہے لیکن دشمن کا مقابلہ کرنے سے پیچھے نہیں ہٹ سکتی،آخر میں انھوں نے فلسطین میں ہونے والے انتخابات میں حماس کے حصہ لینے کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم بھرپور طریقہ سے انتخابات میں حصہ لیں گے کیوں کہ اس طرح ہمارے داخلی اختلافات کو ختم ہونے میں کافی مدد ملے گی جو ہمارے لیے نہایت ہی مفید اور ضروری ہے۔



0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین