سویڈن کی پہلی خاتون وزیر اعظم مستعفی ہونے کے چند ہفتے بعد پھر سے برسراقتدار

سویڈن کی پہلی خاتون وزیر اعظم کےپارٹیوں کے درمیان سیاسی اختلافات کے باعث استعفیٰ دینے کے چند ہی دن بعد پارلیمنٹ نے دوبارہ منتخب کر لیا۔

ولایت پورٹل:سویڈن کی سوشل ڈیموکریٹس کی رہنما اور ملک کی پہلی خاتون وزیر اعظم میگڈالینا اینڈرسن کو پارٹیوں کے درمیان سیاسی اختلافات کی وجہ سے استعفیٰ دینے کے چند روز بعد پیر کو پارلیمنٹ نے دوبارہ منتخب کر لیا، سوشل ڈیموکریٹس کی اقلیتی حکومت بنانے کے اپنے فیصلے کے اعلان کے ایک ہفتے سے بھی کم وقت کے بعد قانون سازوں نے انہیں  دوبارہ منتخب کیا۔
 سویڈن کے سابق وزیر خزانہ اینڈرسن نے گزشتہ بدھ کو پہلے راؤنڈ میں اسی طرح کا ووٹ جیتا تھا لیکن انہوں نے نتائج کے اعلان کے چند گھنٹے بعد ہی استعفیٰ دے دیاکیونکہ مخلوط حکومت میں شامل چھوٹی جماعتوں میں سے ایک گرینز نے اس بات پر احتجاج کرتے ہوئے اتحاد چھوڑ دیا کہ پارلیمنٹ نے حکومت کے بجٹ کی منظوری نہیں دی تھی۔
واضح رہے کہ  محترمہ اینڈرسن جن کی پارٹی کی پارلیمنٹ میں349 میں سے 100 نشستیں ہیں، نے پیر کو ایک نیوز کانفرنس میں بتایاکہ سوشل ڈیموکریٹس پارلیمنٹ میں سب سے بڑا گروپ ہے۔
انھوں نے مزید کہا کہ تاہم تمام اقلیتی حکومتوں کی طرح ہم پارلیمنٹ میں دیگر جماعتوں کے ساتھ مل کر کام کرنے کی کوشش کریں گے اور میں اس کے لیے اچھے مواقع دیکھ رہی ہوں۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین