بحرین میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور مخالفین کی گرفتاریوں پر روک لگائی جائے؛آئر لینڈ کے نمائندوں کا مطالبہ

آئر لینڈ کے نمائندوں نے ایک مجازی اجلاس کے دوران بحرین میں انسانی حقوق کی صورتحال اور مخالفین کی گرفتاریوں پر تنقید کی۔

عربی 21 کی رپورٹ کے مطابق آئر لینڈ کے نمائندوں  نے بحرین کے سماجی کارکنوں کے ساتھ  ایک مجازی ملاقات کے دوران اس ملک میں انسانی حقوق کی صورتحال پر تنقید کی،واضح رہے کہ  یوروپی سنٹر برائے ڈیموکریسی اینڈ ہیومن رائٹس کے زیر انتظام ، اجلاس میں بحرین میں حکام کے ذریعہ انسانی حقوق کی پامالیوں کو روکنے اور اپوزیشن کارکنوں کو نظربند نہ کرنے پر زور دیا گیا۔ آئر لینڈ کے نمائندوں کا کہنا ہے کہ یہ بدقسمتی ہے کہ بحرین میں انسانی حقوق کی پامالیوں کی خبریں بدستور سامنے آتی  رہتی ہیں۔
آئر لینڈ کے نمائندوں نے اس ملک میں سیاسی قیدیوں کے خلاف بحرینی سکیورٹی فورسز کے  سلوک اور سیاسی عہدہ داروں کی  غفلت پر تشویش کا اظہار کیا ہے،یادرہے کہ  اس سے قبل بھی  یورپی یونین کے اعلی نمائندہ برائے امور خارجہ اور سلامتی پالیسی جوزف بورریل نے بحرین میں انسانی حقوق کی صورتحال پر تنقید کی تھی، انہوں نے کہا کہ یورپی یونین کو بحرین میں اظہار رائے کی آزادی اور انسانی حقوق کی صورتحال اور منصفانہ مقدمے کی سماعت کے بارے میں تشویش ہے، بورریل نے کہا کہ ہم بحرینی شہریوں کے ساتھ ہونے والے تشدد ، ناروا سلوک اور من مانے طریقہ سے نظربندی کا خاتمہ چاہتے ہیں۔
واضح رہے کہ بحرین کے خاندانی آمر حمد بن آل خلیفہ اس ملک میں جاری ظلم کو جور نیز بدعنوانیوں کے خلاف اٹھنے والے ہر آواز کو طاقت کے بل بوتے پر دبا رہے  اور سماج کے ہر طبقے کے افراد کو بغیر کسی جرم کےسلاخوں کے پیچھے ڈھکیل دیا جاتا ہے جس سے عوام میں حکومت کے خلاف شدید غم وغصہ پایا جاتاہے ،تاہم عالمی برادری بھی اس طرح کھلے عام انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو خاموش تماشائی بنی دیکھ رہی ہے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین