Code : 2949 17 Hit

چین میں دس دن کے اندر کرونا وائرس کے علاج کے لیے مخصوص ہسپتال تیار

چینی صدر کی اجازت سے کرونا وائرس کے علاج کے لیے ووہان میں دس دن کے اندر تعمیر ہونے والے ایک خصوصی اسپتال میں 1،400 فوجی ڈاکٹروں کو تعینات کیا جائے گا۔

ولایت پورٹل:اسپوٹنیک نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق چینی وزارت دفاع نے ایک بیان میں کہاکہ مسلح افواج نے 1،400 فوجی ڈاکڑوں کو ووہان بھیج دیا ہے جہاں وہ  کرونا وائرس کی وجہ سے پھیلنے والی بیماری دو نمونیا سے نمٹنے کے لئے کوشاں ہیں ۔
قابل ذکر ہے کہ فوج کی طبی سہولیات کے ذریعہ بھیجے گئے ڈاکٹروں کے علاوہ ، چینی فوج کے امراض کنٹرول سنٹر اورفوجی سائنس کی فیکلٹی سے وابستہ آرمی میڈیکل ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کے کے 15ماہرین بھی صوبے  میں روانہ کردیئے گئے ہیں۔
یادرہے کہ  25000مربع میٹر پر مشتمل  سمارٹ لیس ہسپتال ، جو بہت ہی کم وقت تیار کیا گیا ہے ،اس کا افتتاح ہوچکا ہے اور اس میں خصوصی طور پر ایسے مریضوں کے داخل کیا جاتا ہے جو نئے کورونا وائرس کی علامات رکھتے ہیں۔
گذشتہ ہفتےبھی  چینی میڈیا نے اطلاع دی تھی کہ حکومت نے 450فوجی ڈاکٹروں کو صوبے میں بھیجا ہے جن میں وہ ڈاکٹر بھی شامل ہیں جو سارس یا ایبولا کی وباء کا علاج کرنے کا تجربہ رکھتے ہیں۔
رائٹرز نیوز ایجنسی نے یہ بھی اطلاع دی ہے کہ ہوبی میں مقامی حکام ووہان میں وائرس سے متأثر ہ مریضوں کے علاج کے لئے دوسرا اسپتال بنانے کے لئے بھی  کام کر رہے ہیں۔
پچھلے دنوں شہر میں وسیع پیمانے پر تعمیراتی سرگرمیوں کی تصاویر جاری کی گئیں جس میں یہ دکھایا گیا ہے کہ چینی حکومت بہت ہی قلیل وقت میں کرونا وائس سے متأثر ہونے والے مریضوں کے علاج کے لئے ایک بہت بڑا اور پیشرفتہ ہسپتال بنانے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔
ادھر  چینی سرکاری ٹیلی ویژن نے اتوار کے روز خبر دی کہ سنیچر کے روز کورونا وائرس کے باعث صوبہ ہوبی میں مزید45 افراد کی موت ہوگئی ہے جس کے بعد چین میں اس مہلک وائرس کی وجہ سے ہلاکتوں کی تعداد 304 ہوگئی ہے۔


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम