Code : 4424 4 Hit

بعض طالبان قیدی رہا ہونے کے بعد پھر میدان جنگ میں پہنچ چکے ہیں:عبداللہ

افغانستان کی سپریم قومی مفاہمت کونسل کے سربراہ نے ، ملک میں تشدد میں اضافے کا ذکر کرتے ہوئے کہا ، "حکومت کے ذریعہ رہا ہوئے کچھ طالبان قیدی میدان جنگ میں واپس چلے گئے ہیں۔

ولایت پورٹل:افغانستان کی سپریم قومی مفاہمت کونسل کے چیئرمین عبداللہ عبد اللہ نے حکومت کی طرف سے رہا کیے گئے متعدد طالبان قیدیوں کے میدان جنگ میں واپس چلے جانے کی خبر دی ہے، عبداللہ نے امریکی کونسل برائے خارجہ تعلقات کے ورچول اجلاس میں مزید کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ رہا کیے گئے کچھ طالبان قیدی میدان جنگ میں واپس چلے گئے ہیں اور یہ اس معاہدے کی خلاف ورزی ہے جس کا طالبان نے عہد کیا تھا۔
یادرہے کہ گذشتہ سال افغان حکومت دوحہ میں امریکہ اور طالبان کے امن معاہدے پر دستخط کیےجس کے تحت حکومت نے اس گروہ سے وابستہ ملک کی جیلوں سے 5 ہزار قیدیوں کو رہا کیا جنہوں نے جیل سے رہائی کے وقت میدان جنگ میں واپس نہ جانے کا ایک تحریری عہد کیا تھا۔
عبداللہ نے افغانستان میں تشدد میں اضافے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ تشدد کی سطح بہت زیادہ ہے اور اس حد تک کہ یہ لوگوں کے لئے قابل قبول نہیں ہے، انہوں نے امریکہ ، جس نے طالبان سے معاہدے کے ذریعے امن عمل کا آغاز کیا ہے  اور پاکستان جو طالبان ممبروں سے رابطے میں ہے ،  سے مطالبہ کیا  کہ وہ اس گروپ پر جنگ بندی پر راضی ہونے کے لئے دباؤ ڈالیں ۔
افغانستان کی سپریم قومی مفاہمت کونسل کے چیئرمین نے دوحہ میں افغان امن مذاکرات کو مثبت قرار دیا،یادرہے کہ 22 ستمبر کو دوحہ میں افغانستان امن مذاکرات کا آغاز ہوا ہے تاہم  جمہوریہ افغانستان اور طالبان کی مذاکراتی ٹیموں کے رابطہ گروپس ابھی تک امن مذاکرات کے انعقاد سے متعلق کسی حتمی معاہدے تک نہیں پہنچ سکے ہیں۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین