Code : 4025 3 Hit

محاصرہ فلسطینی عوام کو کمزور نہیں سکتا:حماس کے عہدہ دار

حماس کے پولیٹیکل بیورو کے سربراہ کے میڈیا مشیر نے مزاحمت کو ہتھیار ڈالنے کے بدلہ میں 15 بلین ڈالر کی پیش کش کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ اس ناکہ بندی کے ذریعہ فلسطینی عوام کو کمزور کر دیں گے لیکن ان کا یہ خیال غلط ہے۔

ولایت پورٹل:القدس العربی  کی رپورٹ کے  مطابق حماس کے پولیٹیکل بیورو کے سربراہ اسماعیل ہنیہ نے رواں ہفتے کہا تھا کہ مزاحمتی تحریک  کو ہتھیار ڈالنے کے بدلہ میں 15 بلین ڈالر کی تجویز کو مسترد کی جا چکی ہے،آج ان  کے میڈیا مشیر طاہر النونو نے حماس کے پولیٹیکل بیورو کے سربراہ کے بیانات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہنیہ نے دنیا کے تمام آزاد لوگوں اور فلسطینی عوام کی ترجمانی کرتے ہوئے بات کی کہ ہم دلال نہیں بلکہ فلسطینی وطن اور نظریات کے مالک ہیں۔
انہوں نے مزید کہاکہ کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ محاصرے اور ان مشکل سالوں کے بعد اور فلسطینی عوام کو گھٹنے ٹیکنے کے لیے مجبور کرنے کی کوشش کے بعد ، وہ اس طرح کےمنصوبے کا وعدہ کرکے فلسطینی عوام کو ان کے حقوق سے محروم کرسکتے ہیں اور ان پر اپنی شرائط مسلط کر سکتے ہیں، النونو نے یہ کہتے ہوئے کہ  اس تجویز میں غزہ حکومت کی تشکیل بھی شامل ہے، مزید کہا کہ کچھ کا خیال ہے کہ حماس اپنا کردار ادا کرتے ہوئے غزہ کو بقیہ فلسطین اور قدس نیز مغربی کنارے اور فلسطین کی سرزمین سے الگ کر سکتی ہے لیکن وہ غلط سوچ رہےہیں،آخر میں  انہوں نے فلسطین کی آزادی اور اس سمت میں مجاہدین کی کوششوں اور مزاحمتی تحریک کی ترقی پر زور دیا،یادرہے کہ صیہونی حماس کے حملوں سے شدی خوف وہراس کا شکار ہیں یہی وجہ ہے کہ اس تنظیم کو طرح طرح کی پیش کیش کر کے اس کو فلسطین کی باقی تنظیموں سے الگ کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین