Code : 3113 13 Hit

ایک سال کے اندر تیسری بار انتخابات پر شرم آتی ہے: صہیونی صدر

صیہونی صدر نے انتخابات میں بڑے دعویداروں کی پولنگ مہموں پر تنقید کرتے ہوئے ایک سال میں تیسری بار الیکشن کرانے پر شرمندگی کا اظہارکیا ہے۔

ولایت پورٹل:اسرائیل ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق صہیونی رہنما ووئن رولن نے پیر کو  اپنا حق رائے دہی استعمال  کرتے ہوئے کہا کہ انہیں شرم آتی ہے کہ وہ ایک سال میں تیسری بار عام انتخابات کروانے پر مجبور ہوئے ۔
ریولن نے کہا کہ آج کا دن واقعی ایک جشن منانے کا دن ہونا چاہئے  لیکن حقیقت یہ ہے کہ میں خوش نہیں ہوں۔
جب میں آپ سے ملتا ہوں تو مجھے صرف ایک شرمندگی کا احساس ہوتا ہے۔
انہوں نے انتخابات سے قبل ہونی والی انتخاباتی مہموں میں امیدواروں کی طرف سے ایک دوسرے پر الزام تراشیاں  کرنے کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ہم کسی ایسی انتخابی مہم کے مستحق نہیں ہیں جو غلاظت اور لالچ میں ختم ہو ،جیسا کہ اس بار ہوا ہے۔
صہیونی میڈیا نے آئی ایم ایف کے تخمینوں کی بنیاد پر یہ بھی اطلاع دی ہے کہ اس بار کے انتخابات میں مقبوضہ فلسطینی آبادی کی پچھلے دور کےانتخابات مقابلے میں شرکت کم رہی۔
اسرائیلی ٹائمز کے نمائندے کے مطابق ، مقامی وقت کے مطابق شام تین بجے تک 26.7 فیصد پولنگ ہوئی جو پچھلے دور کے انتخابات کے مقابلہ میں کم تھی۔
اگرچہ نیتن یاہو اور گینٹز نے انتخابی مہم میں اپنی اپنی جیت کا دعوی کیا ہے تاہم مقبوضہ فلسطین میں ایک ماہ قبل ہونے والے  سروے کے مطابق رائے شماری میں جاری سیاسی تعطل اور صہیونی کابینہ کی ناکامی کا عندیہ دیا گیا ہے۔
انتخابات  سے دو تین د ن پہلے عبرانی زبان کی ویب سائٹ والانیوز کے ذریعہ کیے جانےوالے سروے کی رپورٹ سے معلوم ہوتا ہے کہ گینٹز اور نیتن یاہو کا 34نشستیں حاصل کرنے  کےبعد برابر ہونے کا امکان ہے  نیز باوجود دائیں بائیں بازو اتحاد بھی  اکثریت تک نہیں پہنچ سکیں گے۔






0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین