Code : 3064 15 Hit

ٹرمپ کے ہندوستان آتے ہی نئی دہلی میں 7 افراد ہلاک

ہندوستان کے دار الحکومت نئی دلی میں شہریتی ترمیم کے متنازعہ قانون کے مخالفین اور حامیوں کے درمیان تصادم ہوا جس میں پولیس کی مداخلت کی وجہ سے سات افراد ہلاک ہوگئے۔

ولایت پورٹل:روئٹرز نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ایک طرف ہندوستان کے سرکاری عہدہ دار امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی اس ملک آمد پر ان کے استقبال میں لگے ہوئے ہیں اور دوسری طرف دار الحکومت نئی دہلی میں غیر مسلم افراد کو ہندوستان کی شہریت دینے کے متنازعہ قانون کے خلاف مظاہرہ کرنے والے افراد بے تحاشہ طاقت کے استعمال کی وجہ سے 7افراد ہلاک جبکہ 90 زخمی ہوگئے ۔
بی بی سی نے بھی نئی دہلی مظاہروں میں ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد  سات بتائی ہے۔
یادرہے کہ اس قانون  منظوری کے بعد سے اب تک اس  کے خلاف مظاہروں اور احتجاج کا سلسلہ جاری ہے جہاں پیر کو دارالحکومت نئی دہلی میں ہونے والے مظاہرے نے تشدد کا رخ اختیار کر لیا۔
مذکورہ قانون کے تحت چھ مختلف گروہوں کو ہندوستانی شہریت دی جائے گی جن کے بارے میں کہا جاتا ہے ان کے مسلمان پڑوسی ممالک نے ہندوستان کی تاریخ میں مختلف ادوار میں ان افراد پر ظلم کیا ہے۔
تاہم اسے قانون کے مخالفین کا کہنا ہے کہ شہریت کا قانون مسلمانوں کے ساتھ امتیازی سلوک ہے اور اس کی وجہ سے ہندوستان کے آئین کو نقصان پہنچا ہے۔
نئی دہلی میں پیر کے روز ہونے والے مظاہروں میں مذکورہ متنازع قانون کےمخالفین کے علاوہ ، حامی بھی موجود تھے ، جس کے نتیجے میں دونوں فریقوں کے درمیان پرتشدد جھڑپیں شروع ہوئیں۔
گرو ٹیگ بہادر اسپتال کے ایک سینئر عہدیدار ، راجیش کالرا نے رائٹرز کو بتایا  کہ مظاہرے میں زخمی ہونے والےجن لوگوں کو ہمارے اسپتال لایا گیا تھا ان میں سے کچھ کے جسموں پر گولیوں کے نشان ہیں۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین