Code : 3081 43 Hit

شام کے صوبہ ادلب میں دہشتگردوں اور شامی فوج کے درمیان شدید جھڑپیں جاری

شامی ذرائع ابلاغ نے صوبہ ادلب کے مغربی حصے میں شامی فوج اور دہشت گردوں کے مابین شدید جھڑپوں کی خبر دی ہے۔

ولایت پورٹل:شامی سرکاری نیوز ایجنسی سانا کی رپورٹ کے مطابق صوبہ ادلب کے مغربی حصے میں  واقع قصبہ سرقاب میں شامی فوج اور  دہشت گرد گروہوں کے درمیان شدید جھڑپیں جاری ہیں ۔
رپورٹ کے مطابق جھڑپیں شدید ہیں ، لیکن یہ شہر ابھی شامی فوج کے کنٹرول میں ہے۔
تاہم کچھ مخالف ذرائع ابلاغ اور الجزیرہ سمیت کئی چینلوں نے دعوی کیا ہے کہ دہشت گرد گروہ سراقب قصبہ  پر دوبارہ قبضہ کرنے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔
واضح رہے کہ حلب کی مرکزی نیوز ایجنسی  بھی دعوی کیا ہے کہ دہشت گردوں نے سرقاب پر قبضہ کرلیا ہے لیکن فیلڈ ذرائع نے علاقے میں شدید جھڑپوں کی اطلاع دی ہے۔
شام میں دہشتگردوں سے منسلک شامی ہیومن رائٹس واچ نامی تنظیم  نےسرقاب میں شامی فوج اور دہشت گردوں کے مابین  شدید جھڑپوں کی خبر دیتے ہوئے دعوی کیا ہے کہ  اس شہر کے شمال مغرب میں واقع افس نامی گاؤں کو ترکی سے وابستہ دہشت گرد عناصر نےاپنے قبضہ میں لےلیا ہے ۔
آبزرویٹری نے دعویٰ کیا ہے  کہ مذکورہ  گاؤں پر قبضہ کرنے کے بعد  سراقب کے شمال مغرب میں واقع دمشق - حلب بین الاقوامی شاہراہ پر دہشتگردوں کی جانب سے شدید گولہ باری ہورہی ہیں لیکن  وہ سراقب  سےتین کلومیٹر کی دوری پر ہے۔
اسپوٹنیک نے لکھا ہے کہ دہشتگردوں کو ترکی حمایت حاصل ہے  لیکن شامی فوج نے ان کے حملوں کو پسپا کردیا ہے۔
یادرہے کہ ترکی سے وابستہ دہشت گرد شام کی فوج کو ادلب کے جنوب میں واقع جیبل الزویہ کے اہم  علاقے میں اپنی کارروائیوں کو جاری رکھنے سے روکنے کے لئے سراقب  کے محاذ پر مشغول رکھنے کی کوشش کررہے ہیں ۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین