0 Hit

آل سعود کا آیت اللہ نمر کی مسجد کو شہید کرنے کا حکم

سعودی حکومت نے شہری ترقیاتی منصوبے کے بہانے کے تحت مسجد امام حسین ؑ ، جہاں شیخ نمر خطبہ دیتے تھے کو گرانے کا حکم دیا ہے ۔

ولایت پورٹل:مرآۃ الجزیرہ ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق 2011 کے انقلاب کے برسوں بعد بھی سعودی حکام صوبہ قطیف اور الحسکہ کے شیعہ عوام کے ساتھ امتیازی سلوک اور دباؤ ڈال رے ہیں ، حال ہی میں انہوں نے صوبہ قطیف کے شہر العوامیہ میں امام حسینؑ مسجد کو منہدم کرنے کا حکم دیا ہے،یہ وہ مسجد ہے جہاں شہید "نمر باقر النمر" کبھی نماز پڑھتے تھے او ر خطبے دیتے تھے، سعودی انسانی حقوق کے ایک کارکن ، عادل السعید نے اپنے ٹویٹر پیج پر لکھا ہے کہ سعودی حکومت ہر اس چیزکو ختم کرنے کا ارادہ رکھتی ہے جو شیخ نمر کی یادگار ہو یا مشرقی خطے میں انقلاب اور مظاہروں کے ایام کی علامت ہو۔
واضح رہے کہ سعودی حکومت کے فیصلے کے مطابق العوامیہ مظاہروں کی مرکز ’’الثورہ‘‘ اسٹریٹ کے درجنوں مکانات کو بھی مسمار کیا جانا ہے۔
یاد رہے کہ گذشتہ ماہ بھی سعودی فورسز نے مشرقی علاقے میں متعدد شیعہ علما کو گرفتار کیا تھا۔
قابل ذکر ہے کہ مشرقی سعودی عرب میں 2011 کے انقلاب کے بعد سے لے کر اب تک شیعہ مذہبی مقامات کو کئی بار تباہ کیا گیا ہے ، 2017 میں حسینۂ حضرت زہرا (س) کو تباہ کیا گیا تھا۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین