0 Hit

عراق میں تکفیری دہشت گردوں کے لئے سعودی مالی معاونت؛داعشی سرغنہ کا اعتراف

داعش کے مفتی نے عراق میں مسلح اور دہشت گرد گروہوں کے لئے ریاض کی وسیع پیمانے پر حمایت کا ذکر کرتے ہوئے ، انکشاف کیا کہ وہ دو بار سعودی عرب گیا اور پیسہ وصول کرنے کے لئےمتعدد لوگوں سے ملا ۔

ولایت پورٹل:المعلومہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ، داعش کے مفتی نے آل سعود  کے ذریعہ عراق میں دہشت گردوں کو فراہم  کیے جانے والے تعاون اور مالی اعانت کا انکشاف کیا ۔
داعش کے نام نہاد شریعہ بورڈ کے عہدیدار اور داعش کے بدنام زمانہ مفتی شفاء النعمه نے ریاض کی عراق میں مسلح اور دہشت گرد گروہوں کے لئے وسیع پیمانے پر حمایت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے انکشاف کیا کہ اس نے دو بار سعودی عرب کا سفر کیا ہے اور پیسہ وصول کرنے کے لئے متعدد لوگوں سے ملاقات کی ہے۔
داعش کے مفتی نے کہا کہ 2006 میں ، میں نے مکہ میں ایک یورپی شہری مصطفیٰ العراقی سے ملاقات کی  ، اس نے مجھ سے عراق میں مسلح گروہوں اور وہ کس طرح کام کرتے ہیں کے بارے میں معلومات طلب کیں ، اور مجھے ایک مرکز قائم کرنے اور مسلح گروہوں کی حمایت کرنے کے لئے ان سے رقم ملی۔
انہوں نے سعودی عرب  کےاپنے دوسرے سفر اور ایک سعودی شہری سے ملاقات کا ذکر کرتے ہوئے مزید کہاکہ میں نے اس سے مسلح کارروائیوں کے لئے مالی مدد کی درخواست کی اور جو میں چاہتا تھا مجھے وہ مل گیا اور پیسہ مل گیا۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین