Code : 2484 75 Hit

مغربی یمن پر سعودی اتحاد کے وسیع پیمانے پر حملے؛ اقوام متحدہ کی خاموشی بھی ٹوٹی

یمن میں اقوام متحدہ کی مبصر ٹیم کے سربراہ نے گذشتہ 72 گھنٹوں کے دوران الحدیدہ پر سعودی عرب کے زیرقیادت اتحاد کے حملوں کے نتائج پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یمن مسئلہ کے سلسلہ میں آبزرویشنل کمیٹی کے تشکیل کے بعد حاصل ہونے والے نسبتا پر سکون کے ساتھ یہ اقدام واضح تضاد ہے۔

ولایت پورٹل:المسیرہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق  ہندوستانی جنرل اور یمن میں اقوام متحدہ کے مبصرین کی ٹیم کے سربراہ ابھیجٹ گوہا  کا کہنا ہے کہ گذشتہ2 7 گھنٹوں کے دوران یمن میں سعودی اتحادیوں کے فضائی حملوں میں اضافہ آبزرویشنل کمیٹی کے تشکیل کے بعد حاصل ہونے والے نسبتا پر سکون کے ساتھ یہ اقدام واضح تضاد ہے،گوہا نے حملوں کے نتائج کے بارے میں تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ان حملوں سے تعیناتی کوآرڈینیٹر کی سلامتی کو بھی خطرہ لاحق ہے ، جو جنگ بندی کی نگرانی کا ذمہ دار ہے،یاد رہے کہ یمن میں جنگ بندی کے قیام کے لئے اقوام متحدہ کے زیراہتمام یمن کی سرکاری فوج اور وہاں کی عوامی تنظیم انصاراللہ کے مابین پہلی مشترکہ آبزرویشن پوسٹ رواں سال 6 اکتوبر کو تشکیل دی گئی تھی جس کے بعد مزید کچھ ہفتوں میں اور پوسٹیں بھی تشکیل دی گئیں،اگرچہ الحدیدہ میں جنگ بندی کے معاہدے پر یمن کی حکومت اور صنعاء کے درمیان دسمبر2018 میں دستخط ہوئے تھے ، لیکن اس کے باوجود سعودی اتحاد یمن کے مغربی شہر پر اپنے حملے جاری رکھے ہوئے ہے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین