Code : 2002 11 Hit

غیرملکی ملازمین کے لیے سعودی عرب بدترین ملک

آل سعود کی جیلوں میں دنیا بھرکے ہزاروں محنت کش بغیرکسی جرم وخطا کے قید ہیں۔

ولایت پورٹل:تارکین وطن کے مسائل پر نظر رکھنے والے بین الاقوامی ادارے نے سعودی عرب کو غیرملکی ملازم کارکنان کے لیے بدترین ملک قرار دیا ہے،ایکسپیٹ انسائیڈر کی جانب سے جاری ہونے والی 2018 کی رینکنگ میں خلیجی ملک بحرین کو تارک وطن ملازمین کے لیے سب سے بہترین قرار دیا گیا،بحرین گزشتہ برس بھی فہرست میں صفِ اول رہا تھا، اسی طرح دوسرے نمبر پر تائیوان، تیسرے پر ایکواڈور، میکسیکو چوتھے اور سنگا پور پانچویں پوزیشن حاصل کرنے میں کامیاب رہے،سروے کے دوران مختلف ممالک میں کام کرنے والے غیر ملکی ملازمین سے ڈیوٹی سختیاں، شخصی آزادی، دوستانہ ماحول اور گھر سے باہر گھر جیسے ماحول کے بارے میں سوالات کیے گئے اور پھر 68 ملکوں کی درجہ بندی کی گئی،فہرست میں ملائیشیا 17ویں، کینیڈا 19ویں، فرانس 34ویں، جرمنی 36ویں، یو اے ای کو نمبرز کے حساب سے چالیسواں نمبر دیا گیا،واضح رہے کہ سعودی عرب میں غیرملکی کارکنان کو مختلف قسم کے مشکلات درپیش ہیں، اس وقت آل سعود کی جیلوں میں دنیا بھرکے ہزاروں محنت کش بغیرکسی جرم و خطا کے قید ہیں۔
تسنیم


0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम