Code : 2528 65 Hit

سعودی اتحاد کے ہاتھوں یمن میں ایندھن اور کھانے پینے کی اشیاء لیے جانے والے 13 جہازوں کو غیر قانونی طور پرضبط

سعودی اتحاد نے یمنیوں کے خلاف فضائی اور زمینی حملوں پر اکتفا ء نہ کرتے ہوئے اس غریب ملک میں ایندھن اور کھانے پینے کی اشیاء لے جانے والے 13بحری جہازوں کو بھی ضبط کرلیا ہے۔

ولایت پورٹل:المسیرہ نیوز چینل سے گفتگو کرتے ہوئ مغربی یمن میں واقع الحدیدہ بندرگاہ کے ایک اعلی عہدہ دار نے کہا ہے کہ ایک طرف سعودی عرب جنگ بندی کی باتیں کررہا ہے اور دوسری طرف اپنے ہی موقف کی خلاف ورزی کرتے ہوئے جنگ میں تیزی لا رہا ہے،مذکورہ عہدہ دار نے بتایا ہے کہ اقوام متحدہ کی اجازت کے ساتھ ایندھن اور کھانے پینے کی اشیاء لانے والے13 جہازوں کو سعودی اتحاد  نے روک لیا ہے اور انھیں سامان اتارنے کی اجازت نہیں دے رہا ہے،یمنی آئل کمپنی نے بھی ایک بیان جاری کیا ہے کہ  اگرچہ یمن میں اقوام متحدہ کے مندوب نے سلامتی کونسل کو پیش کی جانے والی  اپنی نئی رپورٹ میں الحدیدہ بندرگاہ میں ایندھن کے جہازوں کے داخلے اور مسئلے کو حل کرنے کی بات کی ہے تاہم  سعودی اتحاد  نےیمنی عوام کی مشکلات میں اضافہ کرنے کے لیے اقوام متحدہ کی اجازت سےآنے والے جہازوں کو روکا ہوا ہے اور انھیں سامان اتارنے کی اجازت نہیں دے رہے ہیں،رپورٹ کے مطابق  جہازوں  میں ایندھن کی مقدار 6000 ٹن پٹرول اور 6،000 ٹن ڈیزل ہے،یمنی بحر احمر کے کوسٹ گارڈ کے سربراہ بریگیڈیئر جنرل زید الوشلی کا کہنا ہے  کہ سعودی اتحاد بحری جہازوں کے خلاف من مانی اقدامات کر رہا ہے ، جس میں انہیں یمن کا پانی چھوڑنے سے روکنا یا بغیر کسی وجہ کے الحدیدہ بندرگاہ پر واپس جانے پر مجبور کرنا ہے،انھوں نے مزید کہا کہ اقوام متحدہ سے اپیل کی ہے کہ سعودی اتحاد کو جہاز رانی کے بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی کرنے سے روکے اس لیے کہ اس سے یمنی عوام کی مشکلات میں اضافہ ہورہا ہے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین