Code : 2246 117 Hit

ایران کے سلسلہ میں سعودی عرب کا پیغام اور عادل جبیر کی ہرزہ سرائی

سعودی خارجہ امور کے وزیر مملکت عادل جبیر کا کہنا ہے کہ ہماری حکومت کے ترجمان کا ایران کے سلسلہ میں بیان غیر ذمہ دارانہ اور غیر واضح تھا۔

ولایت پورٹل:سعودی عرب کے خارجہ امور کے وزیر مملکت عادل جبیر نے ٹوئیٹر کے اپنے صفحہ پر لکھاہے کہ  ہماری حکومت کے ترجمان کا ایران کے سلسلہ میں بیان غیر ذمہ دارانہ اور غیر واضح  تھا بلکہ اصل میں ہوا یہ ہے کہ کچھ دوست اور برادر ممالک نے  ایران کے ساتھ دشمنی کے خاتمہ کا مطالبہ کیا تو سعودی عرب نے ان کو بتلایا کہ  ریاض ہمیشہ  امن و پائیداری کی کوشش میں رہا ہے ،ایک دوسرے پیغام میں انھوں نے لکھا ہے  کہ ہم نے دوسرے ممالک سے یہ بھی کہا کہ  صلح کے لیے ہاتھ اس کو بڑھانا چاہیے جوخشونت  کشیدگی ،آشوب اور دہشتگردی پھیلانے  کا باعث  ہو،ہم نے ایران کے سلسلہ میں اپنے موقف کا ہر جگہ اور ہر وقت اعلان کیا ہے ،آخری جگہ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی تھی  ہم نے وہاں بھی اپنا موققف بیان کر دیا ہے ،عادل جبیر نے اپنے موقف  کو بیان کرتے ہوئے کہا ہے کہ میں ایک بار پھر ایران کے سلسلہ میں سعودی رؤعرب کے موقف کو آپ کے کانوں تک پہنچا رہا ہوں ، غور سے سنئے؛ دہشتگردی کی حمایت کرنا،تخریبی اور حرج ومرج کی سیاست چھوڑ دیجئے ،عرب  ممالک کے  اندرونی مسائل میں مداخلت نہ کیجئے،بڑے پیمانہ پر تباہی پھیلانے والے ہتھیار نیز بیلسٹک میزائل بنانا بند کردیجئے،عادل جبیر نے مزید کہا کہ حکومت کے ترجمان یمن کی صلح سے متعلق جو کچھ بھی کہا ہے  سعودی بادشاہ اس کو ہرگز نہیں مانیں گے ،وہ یمن کے حوالہ سے کسی بھی صورت میں ایران کے ساتھ گفتگو نہیں کریں گے اس لیے کہ مسئلہ یمن صرف یمنیوں سے مربوط ہے اور وہ بھی ایران  کے غیر مستحکم کردار کی بناپرہے،ادھر ایران حکومت کے ترجمان علی ربیعی نے ایک پریس کانفرانس کے دوران کہا کہ سعودی عرب کی جانب سے ہمیں پیغام ملا ہے  لیکن ہمیں  ان کے اعلانیہ پیغام  کی ضرورت ہے،یمن جنگ کے سلسلہ میں اگر سعودی حکام اپنی رفتار میں تبدیلی لانا چاہتے ہیں تو ہم انھیں خوش آمدید کہتے ہیں۔



0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम