Code : 3253 7 Hit

بن سلمان نے امریکہ کے حکم سے حماس کے اراکین کو گرفتار کیا ہے:انصاراللہ

یمنی تنظیم انصار اللہ کےپولیٹیکل بیورو کے ممبر کا کہنا ہے کہ بن سلمان نے حماس کے ممبروں کو امریکی حکم پر حراست میں لیا تھا

ولایت پورٹل:الجزیرہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق تنظیم انصار اللہ  کےپولیٹیکل بیورو کے ممبر  محمد البخیتی  نے کہا کہ انہیں سعودی ولی عہد کے ضمیر کے بیدار کرنے کی کوئی امید نہیں تھی اس لیے انہوں نے سعودی عرب کو قیدیوں کے تبادلے کا منصوبہ پیش کیا تھا۔
یادرہے کہ یمنی تنظیم انصار اللہ کے رہنما عبدالمالک بدرالدین الحوثی نے گذشتہ جمعرات کو ایک تقریر میں کہا تھا کہ سعودی عرب میں حماس کے زیر حراست افراد کی رہائی کے بدلے میں  ہم سعودی اتحاد کے پائلٹ کو رہا کرنے کے لیے تیار ہیں۔
انصاراللہ کے پولیٹیکل بیورو کے رکن کا کہنا تھا  کہ انصار اللہ کی طرف سے قیدیوں کے تبادلے کی تجویز معمول کے مطابق پیش کی گئی تھی کیونکہ یمنی قوم کے لئے فلسطین ایک اولین مسئلہ ہے  اور سعودی عرب میں فلسطینیوں کی گرفتاری کا حکم امریکہ نے دیا تھا۔
ا نھوں نے مزید کہا کہ ہمیں یقین ہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کا ضمیر کبھی بیدار نہیں ہوگا اس لیے ہم قیدیوں کے تبادلہ کی تجویز پیش کی تھی۔
عرب سیاسی تجزیہ کار اور مصنف صالح النعامی نے بھی کہا کہ انصار اللہ کی تجویز سعودی عرب میں حکمران حکومت کو تنقید کا نشانہ بنانے کا ایک اہم اقدام تھا  اور سوال یہ ہے کہ بن سلمان نے سعودی عرب میں حماس کے رہنماؤں کو کیوں گرفتار کیا ہے جبکہ یہ تحریک فلسطینیوں کی صیہونی حکومت کے خلاف مزاحمت میں ریڑھ کی ہڈی ہے۔
انہوں نے مزید کہاکہ سعودی عرب میں حماس کے رہنما  اس ملک کی درخواست پر آئے ہیں اور محمد بن سلمان صیہونی حکومت کے ساتھ اسٹریٹجک شراکت داری قائم کرکے ٹرمپ انتظامیہ کو خوش کرنے کے خواہاں ہیں۔
 

0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम