Code : 3767 17 Hit

سعودی عرب کو خطے کے اکثر ممالک کے ساتھ مشکل ہے:یمنی مذاکراتی ٹیم کے رکن

یمن کی یمنی مذاکراتی ٹیم کے رکن نے کہا کہ سعودی عرب یمنی مسئلے کےاپنے پیش کردہ حل کے علاوہ کسی اور حل کو قبول کرنے کے لیے تیار نہیں ہے۔

ولایت پورٹل:المسیرہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق  یمنی قومی مذاکراتی کمیٹی کے ممبر عبدالمالک العجری نے کہا ہے کہ سعودی عرب یمن کے لئے اپنے پیش کردہ حل کے علاوہ کسی اور حل کو قبول نہیں کرتا اور یہ ناقابل قبول ہے۔
انہوں نے مزید کہاکہ سعودی حکومت کے ساتھ بات چیت کرنے کی تمام کوششیں ناکام ہو گئیں ہیں کیونکہ وہ یمن کے مسئلہ میں صرف اپنے ہی پیش کردہ راہ حل کو مسلط کرنےکی تلاش میں ہے۔
العجری نے نوٹ کیا کہ یمن میں جنگ کے آغاز سے ہی بین الاقوامی قانون کے مطابق مختلف حل اور نظریات پیش کیے جارہے ہیں لیکن سعودی عرب یمن میں اپنے مطالبات کو پورا کرنے کی کوشش کرتا ہے اور اسے خطے کے بیشتر ممالک کے ساتھ مسائل ہیں۔
انہوں نے مزید کہاکہ ان کے ساتھ پہلےہی کی طرح مذاکرات جاری ہیں اورنیا کچھ بھی حاصل نہیں ہوا ہے۔
العجری نے کہا کہ اقوام متحدہ بھی  صرف ایک  ڈاکیہ کاکردار ادا کررہی ہے جبکہ  دوسرے فریق نے ایک مہینے سے ہمارے پیغامات کا کوئی جواب نہیں دیا ہے۔
یمنی عہدیدار نے مزید کہا کہ  امریکی عہدیداروں کے بیانات سے ظاہر ہوتا ہے کہ سعودی عرب کو سے یمنیوں کے خون بہانے سے بری کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔
انھوں نے کہا کہ سعودی عرب کے لئے امریکی حمایت بالکل واضح ہے،یمنی اپنے مسائل خود حل کرسکتے ہیں ، سعودی عرب اپنے داخلی امور کو نپٹالے یہی اس کے لیے بہتر ہے۔
 


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین