Code : 3026 75 Hit

آل سعود امریکہ کے ساتھ مل کر فلسطین کو نابود کرنے کے درپے ہے:حماس

حماس کے ترجمان کا کہنا ہے کہ صدی ڈیل سے متعلق سعودی عرب کے مشیر وزیر کا تبصرہ اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ سعودی عرب اور امریکہ دونوں مل کر فلسطین کے مسئلے کو ختم کرنے کے کوشش کررہے ہیں جبکہ تمام عرب اور اسلامی اداروں نےاس ڈیل کو مسترد کردیا ہے ۔

ولایت پورٹل:القدس العربی بین الاقوامی اخبار کی رپورٹ کے مطابق فلسطین کی اسلامی مزاحمتی تحریک حماس نے اعلان کیا ہے کہ امریکی صدی ڈیل میں مثبت نکات بیان کرنے  پر مبنی سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر کا تبصرہ مبینہ امن منصوبے کو مسترد کرنے پر عربی اتفاق رائے کے منافی ہے،وہ  اس ڈیل کو پھیلانےکی کوشش کررہے ہیں۔
حماس کے ترجمان حازم قاسم نے ایک بیان میں کہاکہ سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر کا کہنا ہے کہ صدی ڈیل میں  مثبت پہلو پائے جاتے ہیں جواس  معاہدے کی مخالفت کرنے والے عرب ممالک کے موقف کےمنافی ہے۔
یادرہے کہ ٹرمپ کے مسلط کردہ معاہدے کی عرب لیگ ، اسلامی تعاون تنظیم ، افریقی یونین ، اور متعدد ممالک کی  جانب سے شدید مخالفت کی گئی جنہوں نے اصرار کیا کہ یہ منصوبہ فلسطینی عوام کے جائز حقوق اور امنگوں کی کم سے کم سطح پر پورا نہیں اترتا اس کے علاوہ یہ  امن عمل کے ساتھ بھی متصادم ہے۔
اس کے باوجود عادل الجبیر نے جمعہ کے روز رومانیہ کے دارالحکومت بخارسٹ کے دورے کے موقع پر ایک نیوز کانفرنس میں کہا  کہ ٹرمپ کے امن منصوبے میں مثبت نکات  موجودہیں جو بات چیت کی بنیاد بن سکتے ہیں۔
حماس کے ترجمان نے متنبہ کیاکہ اس طرح کے بیانات سے قابض حکومت اور امریکی حکومت کو صدی کی ڈیل کو آگے بڑھانے میں مدد ملے گی جس کے بعد وہ  مسئلۂ فلسطین کو نابود کرنے کوششیں تیز کردیں گےاور فلسطینی قوم کے حقوق کو پائمال کرتے رہیں گے۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین