Code : 2464 92 Hit

آل سعود کی عدالت میں ایک بار پھر بے عدالتی کا مظاہرہ؛ اڑتیس افراد پر دہشتگردی کا الزام عائد

سعودی حکام کی جانب سے آئے دن اپنے مخالفین پر دہشتگردی کا الزام عائد کرکے انہیں راستے سے ہٹا دیا جاتا ہے اسی سلسلے کو آگے بڑھاتے ہوئے آج ایک بار پھر افراد پر دہشتگردی کا الزام عائد کیا گیا ہے۔

ولایت پورٹل:سعودی نیوز ایجنسی الاخباریہ نے اپنی ویب سائٹ پر لکھا ہے کہ ریاض کی فوجداری عدالت نے کل اڑتیس سعودی شہریوں پر دہشتگردی کی حمایت کرنے کا الزام عائد کیا ہے جن میں سے ایک شخص  پر الزام ہے کہ اس نے خفیہ دہشتگرد تنظیم بناکر بعض دیگر افراد کو اس میں شامل کر لیا تھا تاکہ ملک کی سلامتی میں خلل ایجاد کیا جاسکے ،یاد رہے کہ کچھ ہی مہینے پہلے سعودی حکام نے سینتیس افراد کو  دہشتگرد تنظیم بنانے کے جرم میں پھانسی پر لٹکا دیا تھا جن  کے بارے میں بعد معلوم ہوا کہ ان میں سے 32 افراد قطیف کے رہنے والے شیعہ حضرات تھے جو شرقیہ علاقے کے دینی طالب علم اور علماء تھے ،سعودی عرب میں سرگرم انسانی حقوق کی مدافع تنظیموں کی رپورٹ کے مطابق ان افراد کا جرم یہ تھا کہ انہوں نے سعودی حکومت کے خلاف مظاہروں میں شرکت کی لیکن ان پر دہشتگردی کا الزام عائد کردیا گیا ،قابل ذکر ہے کہ جب ان سینتیس افراد کو گرفتار کیا گیا تھا تو اسی وقت اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق نے اس اقدام کی مذمت کرتے ہوئے کہا تھا کہ سعودی عدالتوں میں عدالت کی رعایت نہیں کی جاتی ہے اور تفتیش کے دوران اعتراف مخالف افراد کو پھانسی کے پھندے پر لٹکا دیا جاتا ہے۔

0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम