سعد حریری آل سعود کے دباؤ کا شکار

لبنانی ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ ریاض نے سعد حریری پر دباؤ ڈالا ہے کہ وہ اپنے سنی حامیوں کو 15 مئی کے پارلیمانی انتخابات سے قبل سعودی حمایت یافتہ فہرستوں کو ووٹ دینے کے لیے تیار کریں۔

ولایت پورٹل:رائے الیوم اخبار کی رپورٹ کے مطابق لبنانی حلقوں نے لبنان کی فیوچر موومنٹ کے سربراہ سعد حریری پر ریاض کے بالواسطہ دباؤ کو بے نقاب کیا تاکہ وہ اپنے سنی حامیوں کو 15 مئی کے انتخابات میں ریاض کی حمایت یافتہ فہرستوں کو ووٹ دینے پر آمادہ کریں۔
یاد رہے کہ یہ بات ایسے وقت میں  سامنے آئی ہے جبکہ ریاض نے حریری اور فیوچر موومنٹ کو انتخابات میں حصہ لینے سے روک دیا اور انہیں لبنانی سیاسی عمل سے باہر کرنے پر مجبور کیا جس کے بعد 24 جنوری 2022 کو حریری نے بیروت میں ہونے والے پارلیمانی انتخابات میں حصہ نہ لینے کا فیصلہ کیا۔ ریاض کی درخواست پر کیا گیا۔
واضح رہے کہ حالیہ دنوں میں بیروت میں سعودی عرب سے وابستہ عناصر نے حریری سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اپنے حامیوں کی قیادت کریں اور بیروت میں فیوچر تحریک کو سعودی حمایت یافتہ فہرستوں کو ووٹ دیں خاص طور پر جب کہ اندازوں اور رپورٹوں کے مطابق حریری کے حامی انتخابات یا ووٹنگ کا بائیکاٹ کر رہے ہیں۔
واضح رہے کہ حریری کو غدار کہنے والوں کے خلاف کارروائی کرنا اور یہ درحقیقت حریری کے حامیوں کی طرف سے انہیں سیاسی منظر سے ہٹانے کا ردعمل ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین