Code : 2529 51 Hit

داعش کا عراقی جیلوں پر حملوں کا منصوبہ

عراقی انٹیلی جنس اہلکار نے بتایا کہ داعش اور اس کے حامیوں نے کچھ جیلوں پر حملہ کرنے کے منصوبہ بنانے مصدقہ شواہد موجود ہیں۔

ولایت پورٹل:لبنان سے شائع ہونے والے اخبارالاخبار نے اپنی ایک رپورٹ میں لکھا ہے کہ عراق میں یکم اکتوبر سے شروع ہونے والے مظاہروں میں  کچھ ملکی اور غیر ملکی عناصر اپنے  مقاصد کو حاصل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں،رپورٹ کے مطابق بدنام زمانہ دہشتگرد تنظیم داعش جس کا وجود عراق سے نیست ونابود ہوچکا تھا صرف کچھ شہروں میں اکا دکا افراد منھ چھپائے پھررہے تھے  انھوں نے بھی اس ملک میں پیش آنے والے حالیہ آشوب کی آڑ میں اپنے شر پسند عناصر کو منظم کرنا شروع کر دیاہے ،داعشی عناصر عراقی جیلوں پر چھاپے مارنے کے لئے بڑے پیمانے پر کاروائیاں کرنے اور ہزاروں قیدیوں کو بھگا لے جانے کا منصوبہ بنا رہے ہیں  جن میں ان کے متعددسرغنہ بھی شامل ہیں، قابل ذکر ہے کہ عراقی جیلوں میں مختلف دہشت گرد گروہوں کے اٹھارہ ہزار سے زیادہ عناصر موجود ہیں جن میں القاعدہ،انصار السنہ، داعش، الجیش الاسلامی،جیش الراشدین،جیش الفاتحین،حماس العراق اور جیش المصطفى کے شر پسند عناصر شامل ہیں جنہیں سلامتی دستوں نے پندرہ سال کی محنت کے بعد گرفتار کیا ہے،عراق کے ایک  انٹیلیجنس عہدیدار نے الاخبار کو بتایا کہ داعش کے اس منصوبہ  کےپیچھے بیرونی طاقتوں کا ہاتھ ہے اس لیے کہ عراقی جیلوں میں قید افراد میں سے زیادہ تر کا تعلق داعش سے ہے  اور ا ن میں سے بھی متعدد سرغنہ ایسے ہیں جنہیں پھانسی کی سزا ہوسکتی ہے ،انھوں نے مزید کہا کہ داعش غیرملکی طاقتوں کی پشت پناہی میں مختلف جیلوں پر حملہ کرکے ان شرپسند عناصر کو فرار کروانے کے منصوبے بنارہی ہے تاکہ اس ملک میں داعش کو پھر سے منظم کیا جاسکے،انھوں نے کہا کہ مختلف شہروں کے سکیورٹی اداروں کو ان منصوبوں کے متعلق آگاہ کر دیا گیا ہے۔



0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम