ریاض زیادہ دن تک تیل کی کم قیمتوں کو برداشت نہیں کر سکتا:روسی ماہر

ایک روسی ماہر کا کہنا ہے کہ روس کے برخلاف سعودی عرب زیادہ دن تک تیل کی کم قیمتوں کو برداشت نہیں کر سکتا۔

ولایت پورٹل:روس کے ایک ماہر سمیر ایوب نے العہد نیوز ایجنسی کو دیے جانے والے ایک انٹرویو میں کہا کہ سعودی عرب تیل کے بحران کے سامنے زیادہ دن تک نہیں ٹک سکے گا  لیکن روس پر اس کا زیادہ اثر نہیں پڑے گا کیونکہ اس کی معیشت تیل پر منحصر نہیں ہے۔
انہوں نےوضاحت کی کہ  روس نے متعدد بحرانوں کا سامنا کیا ہے جن کی وجہ سے وہ زیادہ طاقتور ہوچکا ہے  اور بنیادی طور پر اس ملک کی معیشت تیل پر منحصر نہیں ہے۔
سمیر نے مزید کہا کہ اس بحران سے روس کو فائدہ ہوگا کیونکہ وہ تیل پر منحصر نہیں ہے  بلکہ اسے گیس کی برآمد اور اسلحہ کی فروخت سمیت دیگر ذرائع تک بھی رسائی حاصل ہے نیز تب تک اوپیک میں واپس نہیں آئے گا جب تک کہ وہ اپنی شرائط نہ رکھ لے جن کا اعلان جلد ہی وہ کرنے والا ہے۔
انہوں نے سعودی بجٹ نظام میں سکیورٹی کے کم مارجن کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی طرف سے اپنے آپ کو مشرق وسطی کے ایک مضبوط شخص کی حیثیت سے پیش کرنے کے لئے سعودی حکومت میں یکطرفہ پن کے غلط فیصلوں کے نتائج جلد ہی برآمد ہوں گے۔
ایوب نے وضاحت کی کہ سعودی عرب نے یہ فیصلے امریکی احکامات پر کیے ہیں تاکہ  روس ، اسلامی جمہوریہ ایران اور ان ممالک کو متاثر کرے جن کی معیشت تیل پر منحصر ہے۔
واضح رہے کہ بہت سارے ماہرین کا خیال ہے کہ یہ سچ ہے کہ ماسکو اور ریاض تیل کی کم قیمت سے مطمئن نہیں ہیں ، لیکن سعودی عرب تیل کی اس  جنگ کو ہار جائے گا۔
روسی ماہر کا کہنا ہے کہ یمن کے خلاف سعودی عرب اپنے داخلی اخراجات ، وسائل اور جنگ برداشت نہیں کرسکتا۔
 


1
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین