Code : 2686 50 Hit

آل سعود اب اپنی مرضی کو یمن پر مسلط نہیں کرسکتے: ایران میں تعینات یمنی سفیر

ایران میں یمن کے سفیر نے ایک انٹرویو میں کہا کہ یمن آج پوری طرح سے بدل گیا ہے اور سعودی عرب کے ہاتھ سے نکل گیا ہے ، ریاض اب اپنی مرضی کو یمن پر مسلط نہیں کرسکتا۔

ولایت پورٹل:ایران میں تعینات یمن کے سفیر ابراہیم الدلیمی نے بدھ کے روز پریس ٹی وی نیوز چینل کو دیے جانے والے انٹرویو میں ملک میں حالیہ پیشرفت کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ سعودی عرب نے یمن کے خلاف جارحیت کا آغاز کرتے ہوئے ملکی اور علاقائی حالات کے لحاظ سے متعدد اہداف حاصل کرنے کی کوشش کی،اس وقت سعودی عرب میں اندرونی طور پر حکمران خاندان کے اندر اقتدار کی جدوجہد جاری تھی ، اور "محمد بن سلمان" کے لئے یہ اچھاموقع تھا کہ وہ یہ ثابت کریں کہ وہ آئندہ بادشاہ منتخب ہوسکتے ہیں،وہ خود کو ایک ایسے ہیرو کے طور پر پیش کرنا چاہتے تھے جو یمن پر حملہ کرکے فائدہ اٹھا سکتا ہے،یمنی سفیر نے مزید کہا: "لیکن یمن میں ان کی گرفتاری نے ان کے مقاصد کو کئی سالوں تک موخر کر دیا اور آخر کار انھوں نے اپنے کزن محمد بن نائف کو ولی عہدی سے ہٹا دیا  اور دیگر شہزادوں کوگرفتار کر کے ریٹس کارلٹن ہوٹل میں ڈال دیا،انہوں نے انٹرویو میں یمن پر حملہ کرنے کے بن سلمان کے علاقائی اہداف کا تذکرہ کرتے ہوئے مزید کہاکہ ان کا ایک اور علاقائی ہدف  یہ تھا  کہ وہ ایک علاقائی تنظیم بنا سکیں جو دیگر علاقائی تنظیموں کا مقابلہ کرے  اوریہ  خطے میں امریکی منصوبے کے ایک اہم شراکت دار کے طور پرابھر کر سامنے آئیں،اس کے نتیجے میں انھوں نے  صیہونی دشمن کے ساتھ ہر سطح پر تعلقات پیدا  کیے،البتہ یمن میں ان کی گرفتاری سعودی عرب کے علاقائی طاقت میں بدلنے اور امریکی اسرائیلی منصوبے کو خطے تک پہنچانے میں حقیقی تاخیر کا سبب بنی۔


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین