Code : 3523 10 Hit

اسرائیل کے ساتھ تعلقات بحال کرنا دہشت گردوں کا انعام دیناہے:جہاد اسلامی فلسطین

جہاد اسلامی فلسطین تحریک کے ایک رہنما نے صیہونی حکومت اور سوڈان کے مابین تعلقات کو معمول پر لانے کے لئے اٹھائے گئے اقدامات پر تنقید کی۔

ولایت پورٹل:القدس نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ، جہاد اسلامی فلسطین تحریک کے ایک رہنما  داؤد شہاب نے صیہونی حکومت اور سوڈان کے مابین تعلقات کو معمول پر لانے کے لئے اٹھائے جانے والے اقدامات کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو اور سوڈان کی عبوری کونسل کے چیئرمین عبد الفتاح البرہان کے مابین سیاسی تعلقات کو معمول پر لانا در حقیقت تل ابیب کی دہشت گردانہ سرگرمیوں کا صلہ ہے۔
شہاب نے مزید کہاکہ البرہان سوڈان کے اصل موقف سے ہٹ رہے ہیں اوران دہشت گردوں کو تحائف دے رہے ہیں جنہوں نے سوڈان کو بار بار دھمکی دی  ہے اور اس کے ٹکڑے ٹکڑے ہونے کی حمایت کی ہے۔
انہوں نے مزید کہاکہ جنوبی سوڈان کے حوالے سے صہیونی غاصبوں کے اقدامات کسی سے پوشیدہ نہیں ہیں اور انہوں نے سوڈان کے بکھرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔
واضح رہے کہ حالیہ دنوں میں  اسرائیلی وزیر اعظم کے دفتر نے ایک بیان میں اعلان کیا ہے کہ وزیر اعظم بنیامین نیتن یاھو نے حال ہی میں سوڈانی گورننگ کونسل کے چیئرمین عبد الفتاح البرہان سے ٹیلیفون پر گفتگو کی ہے۔
بیان میں کہا گیا ہے کہ دونوں اطراف نے خرطوم اور تل ابیب کے مابین تعلقات کی ترقی پر تبادلہ خیال کیا ہے۔
دریں اثنا ، فروری میں اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو اور سوڈانی وزیر اعظم عبد الفتاح البرہان کے مابین ہونے والی ملاقات کے بارےمیں مذمت کی لہر دوڑ گئی۔
صہیونی اخبار یدیؤتھ آہرونت نے حال ہی میں دعوی کیا ہے کہ سوڈان نے پہلی بار مقبوضہ علاقوں کو اپنی فضائی حدود سے تجارتی پروازوں کی اجازت دی ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین