سویڈن اور صیہونی حکومت کے تعلقات دوبارہ بحال

صیہونی ریاست اور سویڈن کے وزرائے خارجہ نے ٹیلی فون کے ذریعے سات سال بعد سفارتی تعلقات دوبارہ بحال کرنے پر اتفاق کیا۔

ولایت پورٹل:صیہونی وزیر خارجہ یائیر لاپڈ اور ان کی سویڈش ہم منصب این لینڈی نے آج (پیر) کو ٹیلی فون پر بات چیت کرتے ہوئے سفارتی تعلقات کے آغاز پر اتفاق کیا ، جو 2014 سے منقطع تھےجس کے بعد لاپڈ نے اپنے ٹوئٹر پیج پر لکھا ہے کہ دونوں فریقوں کے وزرائے خارجہ کے درمیان یہ پہلی فون کال تھی  جس سے تعلقات کی بحالی کا غاز ہوا۔
ایک اور ٹویٹ میں انہوں نے اسرائیل کی سلامتی اور حکومت کو تسلیم کرنے کے لیے سویڈن کے عزم کی تعریف کی اور امید ظاہر کی کہ تل ابیب اور سٹاک ہوم مل کر نتیجہ خیز کام کریں گے، تاہم اسرائیلی وزیر خارجہ نے یہ واضح نہیں کیا کہ فون کال کس فریق نے کی تھی ،جبکہ رائے الیوم اخبار کی ویب سائٹ کے مطابق عبرانی زبان کے میڈیا نے رپورٹ دی ہے کہ اسرائیلی وزیر خارجہ نے کال کی تھی۔
واضح رہے کہ ئیر لاپڈنے پہلے بھی اپنی سویڈش ہم منصب کے ساتھ ٹیلی فون پر بات چیت کی تھی اور اب  کئی دنوں کی مشاورت کے بعد دوسری فون کال کے ساتھ ، دونوں فریقوں کے درمیان سرد سیاسی تعلقات معمول پر آرہے ہیں۔
یادرہے کہ صیہونی حکومت اور سویڈن کے درمیان تعلقات اکتوبر 2014 کے بعد اس وقت کے سویڈش وزیر خارجہ مارگوٹ والسٹروم کی ریاست فلسطین کے اعتراف پر تقریر کے بعد خراب ہو گئے اس لیے کہ اس موقف کا فلسطینیوں نے پرتپاک استقبال کیا جبکہ صہیونیوں میں غم و غصہ کی لہر دوڑ گئی اس کے بعد تل ابیب نے سٹاک ہوم سے تعلقات منقطع کر لیے اور سویڈن کے وزرائے خارجہ کو مقبوضہ فلسطین میں داخل ہونے سے روک دیا۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین