Code : 2634 29 Hit

لبنان میں نئی حکومت بننے کے بارے میں تازہ قیاس آرائیاں

بہت سارےذرائع ابلاغ اور ماہرین لبنانی پارلیمنٹ کے کل کے اجلاس کے بارے میں شکوک و شبہات کا شکار ہیں ، اور پیش گوئی کررہے ہیں کہ اسے تیسری بار بھی ملتوی کردیا جائے گا۔

ولایت پورٹل:لبنانی اخبار سفیر الشمال میں غسان الریفی نے لکھا ہے کہ اس سے پہلے لبنانی پارلیمنٹ کا وزیر اعظم منتخب کرنے کا اجلاس دو بار ملتوی کردیا گیا  اور اب ایک بار پھر  نے کل (جمعرات) کو لازمی مشاورت کے لئے اپنے دروازے کھولنے کا اعلان کیا ہے،رپورٹ کے مطابق کل کے اجلاس کے سلسلہ میں بھی کوئی مثبت اشارہ دیکھنے کو نہیں مل رہا ہے ، خاص طور پر یہ کہ وزیر اعظم سعد الحریری دو اہم عیسائی اتحادوں ، التیار الوطنی الحر اور القوات‌اللبنانیه کے ووٹ حاصل کیے بغیر کابینہ تشکیل دینے کے لیے تیار نہیں ہوں  گے کیوں کہ وہ  پارلیمنٹ کے کے اجلاس میں  ستر سے زیادہ ووٹوں  کے خواہاں ہیں،رپورٹ میں مزید آیا ہے کہ مذکورہ  دونوں عیسائی اتحاد سعد الحریری کو  اپنی شرائط منواناچاہتے ہیں ،التیار الوطنی الحر اپنے وزراء کی شرکت کے ساتھ ایک ٹیکنوکریٹک حکومت بنانے کا مطالبہ کررہی ہے،الجزیرہ نیوز چینل نے بھی لکھا ہے کہ وزیر  اعظم منتخب کرنے کے سلسلہ میں تبادلہ ٔ خیال کرنے کے لیے بلائے جانے والےلبنانی پارلیمنٹ کے  کل کے  اجلاس کےملتوی ہونے کی زیادہ امید ہے،جبکہ  القوات اللبنانیه (سمیر جعجع) سیاسی شخصیات کی موجودگی کے بغیر ٹیکنوکریٹ حکومت بنانے کا مطالبہ کر رہی ہے  اور سعد الحریری مشکل صورتحال میں ہیں،ادھر یہ قیاس آرائیاں بھی کی جارہی ہیں کہ اگر دونوں عیسائی اتحاد التیار الوطنی الحر اور القوات اللبنانیه کا ووٹ سعد الحریری کو نہیں ملتا ہے تو وہ آئندہ کچھ ہی گھنٹوں کے اندر وزیر اعظم بننے سے انکار کردیں گے اور اس کے لے معذرت خواہی کرلیں گے۔



 


0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین