سعدالحریری اور لبنانی صدر کے درمیان اختلاف کی وجوہات

ایک لبنانی اسڑاتیجسٹ کا کہنا ہے کہ سعد الحریری آئین کو پامال کرکے،اس ملک کے صدر مشیل عون کو نااہل قرار دے کر لبنان میں کلیدی وزارتوں کا کوٹہ ضبط کرنے کی کوشش میں ہیں۔

ولایت پورٹل:لبنانی وزیر اعظم سعد الحریری نے نو ماہ کی تاخیر اور وزیر اعظم کے محل میں واپسی کے لئے ملکی اور غیر ملکی راستے بند کرنے کے بعد کے بعد حکومت بنانے سے انکار کر  دیا اور پارلیمانی انتخابات میں حصہ لینے کا فیصلہ کیا، در حقیقت  حریری نے حزب اللہ کے خلاف اشتعال انگیزی کے ذریعہ اپنی انتخابی مہم کا آغاز کیاجس  کو امریکیوں اور فرانسیسیوں نے تیار کیا تھا اس لیے واشنگٹن اور پیرس نے حزب اللہ کے خلاف پارلیمانی اکثریت بنانے کا مطالبہ کیا ہے اور اب بھی کر رہے ہیں،تاہم سعد الحریری اب صدارتی محل چھوڑ چکے ہیں،انھیں 22 اکتوبر 2020 کو لبنان کی نئی حکومت تشکیل دینے کے لئے مقرر کیا گیا تھا ، اس وقت انہوں نے عہد کیا تھا کہ وہ اس ملک کو ٹوٹنے سے روکنے کے لئے جلد ہی غیر جانبدارانہ حکومت تشکیل دیں گے لیکن حقیقت میں یہ ہوا کہ اس کے بعد کے مہینوں میں ہی لوگوں کی معاشی اعتبار سے سب سے زیادہ تباہی ہوئی۔ لوگوں کی تقرری کے بعد واقع ہوئی ہے۔اس سلسلے میں ایک مثال یہ ہے کہ ہریری کے استعفیٰ کے ساتھ ہی ڈالر کی قیمت 7000 پاؤنڈ سے بڑھ کر 22000 پاؤنڈ ہوگئی۔
 واضح رہے کہ الحریری جن  ماہرین کی بات کرر ہے تھے وہ معاشیات  کے ماہرین سے زیادہ ان پارٹی اور ان کے شراکت داروں کے نمائندے تھے،الحریری کے استعفیٰ کے بعد  لبنان میں دو منظرنامے ہیں؛ پہلا منظر نامہ آئین پر عمل درآمد ہے، اس کے مطابق  لبنان کے صدر مشیل عون کو پارلیمنٹ کے ممبروں کے ساتھ  تبادلہ خیال کرنا ہے  تاکہ کسی نتیجہ پر پہنچنے کے بعد  فوری طور پر کسی کو وزیر اعظم کے عہدے کے لیےنامزد کرنے اسے کابینہ تشکیل دینے کی دعوت دینا ہے، اس معاملے میں نگراں وزیر اعظم صدر کے ساتھ ضروری معاہدوں کے بعد کابینہ تشکیل دے گا۔
دوسرا منظر یہ ہے کہ لبنان میں اب بھی کوئی نئی حکومت نظر نہیں آئے گی اور حکومت اپنی سرگرمیاں جاری رکھے گی، موجودہ صورتحال کے پیش نظر ، ایسا لگتا نہیں ہے کہ ہم مستقبل قریب میں لبنانی حکومت کی تشکیل کو دیکھیں گے،واضح رہے کہ مشیل عون اور سعد الحریری کے مابین بہت سے اختلافات رہے ہیں، سعد الحریری نے کابینہ پر اپنا تسلط بڑھانے کی کوشش کی ہے،انھوں نے طویل عرصے سے امریکہ کی حمایت یافتہ میشل عون کو معزول کرنے اور انھیں اپنے آئینی اختیار کو استعمال کرنے سے روکنے کی کوشش کی ہے۔

0
شیئر کیجئے:
ہمیں فالو کریں
تازہ ترین