Code : 1421 59 Hit

رمضان المبارک بدعنوانی سے رہائی اور نفس کی اصلاح کا مہینہ ہے:آیت اللہ خامنہ ای

رمضان المبارک کے یہ مجموعی روزے دائمی مقررہ فرائض و وظائف میں شامل ہیں۔نمازوں کے علاوہ ان روزوں اور دعاؤں پر توجہ مبذول کریں اور اس میں قرآن کی تلاوت کا بھی اضافہ کردیں کہ جس کے بارے میں کہا گیا ہے کہ ماہ رمضان قرآن کی بہار کا موسم ہے تو یہ مہینہ تعمیر نفس اور بدعنوانی سے نجات کا ذریعہ بن سکتا ہے اور اس دور کو بہت ہی غنیمت شمار کیا جاسکتا ہے۔

ولایت پورٹل: ان سب چیزوں کے علاوہ بذات خود ماہ رمضان کے روزے میں روزہ دار کے لئے ایک خاص قسم کی روحانیت اور نورانیت پائی جاتی ہے جو کہ اس کو الٰہی فیض کے حصول کے لئے آمادہ کرتی ہے، رمضان المبارک کے یہ مجموعی روزے دائمی مقررہ فرائض و وظائف میں شامل ہیں۔نمازوں کے علاوہ ان روزوں اور دعاؤں پر توجہ مبذول کریں اور اس میں قرآن کی تلاوت کا بھی اضافہ کردیں کہ جس کے بارے میں کہا گیا ہے کہ ماہ رمضان قرآن کی بہار کا موسم ہے تو یہ مہینہ تعمیر نفس اور بدعنوانی سے نجات کا ذریعہ بن سکتا ہے اور اس دور کو بہت ہی غنیمت شمار کیا جاسکتا ہے۔
اصل بات یہ ہے کہ ہم رمضان کے اس مہینہ میں سیرالی اللہ انجام دیں اور یقیناً انجام دے سکتے ہیں۔ میں نے عرض کیا کہ میں جب کبھی ماہ رمضان کے اختتام پر امام رضوان اللہ تعالیٰ علیہ سے ملاقات کرنے جاتا تھا تو میں محسوس کرتا تھا کہ آپ پہلے سے کہیں زیادہ نورانی ہوگئے ہیں، آپ کی باتیں، نگاہیں، اشارے اور حرکات و سکنات اور اظہار خیال میں رمضان المبارک کے پہلے سے بہت فرق آگیا ہے۔ایک اعلیٰ قدر مؤمن انسان کے لئے ماہ رمضان کا دور اس طرح اپنے اثرات مرتب کرتا ہے، اس کو اس کے دل اور باطن کو اس قدر نورانیت عطا کرتا ہے کہ انسان اس کو اپنے مشاہدات میں محسوس کرسکتا ہے اور اس کے باتیں کرنے سے ہی سمجھ جاتا ہے کہ اس کی نورانیت میں کس قدر اضافہ ہوجاتا ہے۔ خدا کے بندے ایسے ہی ہوا کرتے ہیں، ہمیں اس موقع سے زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھانا چاہیئے۔




0
شیئر کیجئے:
फॉलो अस
नवीनतम